سابقہ حکومتوں کی کرپشن نے ملکی سا لمیت تک کو داؤ پر لگا دیا تھا: فیاض الحسن چوہان

سابقہ حکومتوں کی کرپشن نے ملکی سا لمیت تک کو داؤ پر لگا دیا تھا: فیاض الحسن ...
سابقہ حکومتوں کی کرپشن نے ملکی سا لمیت تک کو داؤ پر لگا دیا تھا: فیاض الحسن چوہان

  



لاہور (آن لائن) وزیر کالونیز پنجاب فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ ماضی کی حکومتوں کی کرپشن نے ملکی سا لمیت تک کو داؤ پر لگا دیا تھا - عمران خان کی قیادت میں موجودہ حکومت کے کرپشن کے خلاف ٹھوس اقدامات کی بدولت ایک سال کے عرصے میں نہ صرف 119 ارب روپے کی بجلی کی چوری روکی گئی بلکہ ساڑھے اکیس ارب روپے کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے خاتمے اور دس ارب ڈالر کی عالمی اداروں کو ادائیگی ممکن ہو سکی ہے - انہوں نے کہا کہ چیک اینڈ بیلنس سسٹم پر سختی سے عمل درآمد کر کے ہی ہم ملک سے کرپشن کے ناسور کر جڑ سے اکھاڑ کر دنیا کی ترقی یافتہ قوموں کی صف میں شامل ہو سکتے ہیں - ا انہو ں نے کہا کہ چیک اینڈ بیلنس سسٹم کے اس کی روح کے مطابق نفاذ سے کرپشن اور اس منسلک مسائل پر قابو پایا جا سکتا ہے- ا نہوں نے کہا کہ عام شہریوں میں کرپشن کے بارے میں شعوری بیداری کے لیئے معاشرے کے پڑھے لکھے طبقات بالخصوص طلبہ کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی ویمن یونیورسٹی میں " ہفتہ انسداد بدعنوانی" کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا - اس موقع پر وائس چانسلر یونیورسٹی پرفیسر ڈاکٹر عالیہ سہیل, سٹوڈنٹس کونسل کی صدر میمونہ اکرم, فیکلٹی ممبران, اساتذہ اور اطالبات کی بڑی تعداد موجود تھی۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ ان کا بلڈ گروپ پی - پازیٹو ہے اور یہی گروپ ہر پاکستانی کا ہونا چاہیے- انہوں نے کہا کہ قدرتی وسائل, بہترین افرادی قوت اور مخصوص جغرافیائی محل وقوع کی وجہ سے پاکستان دنیا بھر میں ایک خاص مقام رکھتا ہے لیکن بدقسمتی سے گزشتہ دہائیوں سے اقتدار اور وسائل پر قابض دشمنوں کے ہاتھوں میں کھلونہ بنی ہوئی اشرافیہ اور ارباب بست و کشاد نے ملک کے بنیادی مسائل کے حل اور اس کی ترقی پر تو جہ دینے کی بجائے اپنی ذاتی جیبیں اور بینک بیلنسز بھرنے کی طرف اپنی تمام توانائیاں صرف کر دیں اور انتہا اس وقت ہو گئی جب دوسرے ممالک سے قرضے میں لیئے گئے اربوں کھربوں روپے اقاموں کی آڑ میں منی لانڈرنگ کی صورت بیرون ممالک میں منتقل ہونے لگے جس کے نتیجے میں ملک کی جڑیں تک ننگی ہونے لگیں - اور ملک پر قرضوں اور سود کی ادائیگی کا بوجھ برداشت کرنا مشکل ہو گیا - انہوں نے کہا کہ ہمارے پڑوسی ملک چائینہ کا سپر پاور امریکا مقروض ہے اور چائینہ سی پیک جیسے ہمہ جہت منصوبے کے لیئے پاکستان پر انحصار کیے ہوئے ہے جو پاکستان کی جغرافیائی اہمیت و افادیت کا بین ثبوت ہے-

انہوں نے کہا کہ وار آن ٹیرر خطے کے قدرتی وسائل پر قبضے کی بہت بڑی سازش تھی جسے پاک فوج اور عوام نے مل کر پسپا کر دیا ہے - صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ یہ ہماری خوش قسمتی ہے کہ اس وقت وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں قائم حکومت نہائیت خلوص نیت اور جانفشانی سے ملک کو درپیش بنیادی چیلنجز سے نمٹنے کے لیئے رات دن کوشاں ہے - انہو ں نے کہا کہ پہلی مرتبہ گزشتہ حکومت کی طرف سے چھوڑا گیا ساڑھے اکیس ارب ڈالر کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم کرنے کے ساتھ درجنوں دیگر اقدامات اٹھائے گئے ہیں جن کے ثمرات بہت جلد آنا شروع ہو جائیں گے- صوبائی وزیر نے کہا کہ بدعنوانی کسی معاشرے کو گھن کی طرح چاٹ جاتی ہے ہمیں انفرادی اور اجتماعی کاوشوں کے ذریعے ایسے عناصر کا بائیکاٹ کرنا چاہیے جو کسی نہ کسی صورت میں بدعنوانی کے مرتکب قرار دیئے گئے ہیں -انہوں نے کہا کہ بدعنوانی کے تدارک کے لیئے قائم ادارے مزید متحرک انداز میں اپنے فرائض منصبی ادا کریں تاکہ ملک کو جلد از جلد ترقی کی منزل سے ہمکنار کیا جاسکے۔ راولپنڈی ویمن یونیورسٹی کی وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عالیہ سہیل نے اپنے خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت کا معاشی اہداف کے حصول کی اعلان ان کی ملکی ترقی کی طرف پیش قدمی کا پیغام دے رہے ہیں. انہو ں نے اس امید کا اظہار کیا کہ بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کے وژن کی پیروی کرتے ہوئے حکومتی اقدامات سے ملکی ترقی کی منازل جلد از جلد طے کرے گا-

وائس چانسلر نے اس موقع پر پاکستان کی بقاء کے لیئے جان کی قربانی دینے والوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کے دیگر ممالک کی افواج میں بھگوڑوں کی تعداد میں اضافے کے مقابلے میں پاکستان میں سخت ترین حالات کے باوجود یہ تعداد صفر ہے اوربھگوڑوں کی تعداد میں اضافے کی بجائے شہداء کی قبروں میں اضافہ ہوا ہے جو ملک خداداد کی سلامتی, استحکام اور ترقی کے ضامن افراد, اداروں اور عوام کی لازوال محبت کا منہ بولتا ثبوت ہے-ڈاکٹر عالیہ سہیل نے طالبات سے کہا کہ وہ بطور پاکستانی ملکی ترقی, خوشحالی اور بہتری کے لیئے اپنا کردار ادا کریں -

مزید : علاقائی /پنجاب /راولپنڈی