غیر قانونی بھرتیاں کیس ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

غیر قانونی بھرتیاں کیس ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

  



لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت میں پنجاب یونیورسٹی میں غیر قانونی بھرتیوں کے خلاف کیس میں سابق وائس چانسلر ڈاکٹر مجاہد کامران سمیت 6 پروفیسرز پرفرد جرم عائد نہ ہوسکی،گزشتہ روز ملزموں کی جانب سے بتایا گیا کہ انہیں صاف نقول فراہم نہیں کی گئیں،عدالت سے استدعاہے کہ صاف نقول کی فراہمی تک فرد جرم عائد نہ کی جائے،جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے مزیدسماعت 14دسمبر تک ملتوی کردی،عدالت نے نیب کو حکم دیاہے کہ مجاہد کامران اوردیگر کو ریفرنس کی صاف نقول آئندہ تاریخ تک فراہم کی جائیں،احتساب عدالت کے جج جواد الحسن کیس کی سماعت کی،نیب کی جانب سے دائر ریفرنس میں کہا گیاہے کہ سابق وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی مجاہد کامران نے خلاف قانون 454 افراد کو کنٹکریکٹ پر بھرتی کیا، اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے مجاہد کامران نے 18 ویں سکیل سے 21ویں سکیل کی بھرتیاں کیں، مجاہد کامران نے بوگس ڈگری ہولڈرز اور ناتجربہ کار افراد کو بھرتی کیا۔

، مجاہد کامران نے اس عمل میں دیگر لوگوں کو بھی ساتھ ملایا، عدالت نے دلائل سننے کے بعد کیس کی مزید سماعت آئندہ تاریخ پیشی تک ملتوی کردی۔

مزید : علاقائی