بنگلہ دیش سے سیریز پاکستان میں ہی ہوگی، پی سی بی

بنگلہ دیش سے سیریز پاکستان میں ہی ہوگی، پی سی بی

  



لاہور (این این آئی)پاکستان کرکٹ بورڈ نے ایک بارپھر ہوم سیریز ملک میں کھیلنے کا اعادہ کرتے ہوئے واضح کیاہے کہ بنگلا دیش کے خلاف سیریز سمیت پاکستان کوئی بھی سیریز نیوٹرل مقام پر نہیں کھیلے گا۔پی سی بی ترجمان کے مطابق بنگلا دیش کرکٹ بورڈ کے خلاف دو ٹیسٹ اور تین ٹی ٹوئنٹی میچوں کے لیے ابتدائی شیڈول بنگلا دیش کرکٹ بورڈکو ارسال کردیاگیاہے۔ سیریز کے آغاز میں پہلے ٹیسٹ میچز رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔دوسرے مرحلے میں ٹی ٹوئنٹی میچز ہوں گے۔اس حوالے سے دونوں بورڈز کے درمیان بات چیت جاری ہے۔ چند روز تک اس شیڈول پر مزید پیش رفت ہوگی۔بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کا سیکیورٹی وفد لاہور اور کراچی کے وینو کا جائزہ لے چکاہے،بنگلا دیش کی ویمن اور انڈر16 بوائز ٹیم پاکستان میں کھیل چکی ہے۔دوسری جانب ذرائع کے مطابق اب سیریز کو دو حصوں میں الگ الگ مقام پرکرانا ممکن نہیں۔پی سی بی پاکستان سپرلیگ سمیت اپنی تمام ہوم سیریز ملک میں کھیلنے کی پالیسی بناچکاہے،جس کو اب بدلنا ممکن نہیں۔بنگلادیش کے خلاف دو ٹیسٹ میچز آئی سی سی ٹیسٹ چمپئن شپ کا حصہ ہیں اور اگر بنگلا دیش کرکٹ بورڈ ٹیسٹ میچز کھیلنے نہیں آتا توپھر اسے پوائنٹس سے محروم ہونا پڑے گا۔علاوہ زیں دورہ پاکستان کیلئے بنگلادیشی ٹیم کو سکیورٹی کلیئرنس کا انتظار ہے۔مقامی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بی سی بی کے چیف ایگزیکٹیو نظام الدین چوہدری نے کہاکہ بنگلادیشی کرکٹ ٹیم کو 18 جنوری کو پاکستان روانہ ہونا ہے لیکن اس کا حتمی فیصلہ سکیورٹی کلیئرنس ملنے پر ہوگا، سکیورٹی دورے کے بعد ہماری ویمنز اور انڈر16بوائز ٹیمیں کھیلنے کیلئے گئی تھیں لیکن ابھی تک قومی ٹیم کیلئے کلیئرنس نہیں ملی،پاکستان میں بنگلادیش کا ہائی کمیشن ہے، آئی سی سی بھی سکیورٹی کا آزادانہ جائزہ لیتی ہے،ان کی جانب سے گرین سگنل ملتے ہی ٹور کے لیے تیار ہوں گے۔نظام الدین چوہدری نے امید ظاہر کی کہ پاکستان کے ساتھ سیریز کا انعقاد ممکن ہوجائے گا، ویمنز اور انڈر 16 بوائز ٹیموں کے دورے کامیاب رہے، آپ کہہ سکتے ہیں کہ اس دوران کوئی غیر معمولی صورتحال پیدا نہ ہوئی تو کلیئرنس مل جائے گی لیکن ہمیں آفیشل رپورٹ کا انتظار کرنا ہوگا۔

 یاد رہے کہ گذشتہ روز بھارتی میڈیا میں یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ بنگلادیشی کرکٹرز کو پاکستان میں ٹیسٹ میچز کھیلنے پر تحفظات ہیں اور دورہ صرف 3ٹی ٹونٹی میچز تک محدود کیے جانے کا خدشہ ہے،دوسری جانب پی سی بی کا موقف تھا کہ ہم آئندہ ہر ہوم سیریز اپنی سرزمین پر کھیلنے کی پالیسی پر عمل پیرا رہیں گے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی