نجی شعبے کو سی پیک پر امریکی مداخلت قبول نہیں ،ہمایوں سعید

نجی شعبے کو سی پیک پر امریکی مداخلت قبول نہیں ،ہمایوں سعید

  



کراچی (این این آئی)پاکستان کا نجی شعبہ چائنا پاکستان اکنامک کوریڈور(سی پیک )منصوبے کے ساتھ پرعزم ہے اورامریکا یا کسی دوسرے ملک کی جانب سے پاکستان کی ترقی میں مددگار سی پیک پر کسی بھی قسم کی تنقید یا مداخلت کو برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ یہ بات ایف پی سی سی آئی کے سابق نائب صدراورسماجی و اقتصادی فورم ہمارا پاکستان کے چیئرمین ہمایوں سعیدنے ایک بیان میں کہی ۔ انہوں نے امریکی ایگزیکٹو اسسٹنٹ سیکریٹری برائے جنوبی ایشیا ایلس ویلز کی جانب سے سی پیک پر کی گئی تنقیدپر اپنے ردعمل میں کہا کہ امریکہ کا یہ خیال غلط ہے کہ سی پیک پاکستان پر قرضوں کا مزید بوجھ بڑھائے گا بلکہ حقیقت یہ ہے کہ سی پیک خصوصی معاشی زون کے ساتھ ہی پاکستان غیرملکی سرمایہ کاری اوراسٹریٹیجک معاشی ترقی کیلئے تجارت کے دروازے کھول دے گا ۔ ہمایوں سعید نے کہاکہ سی پیک کے ذریعہ نہ صرف سڑکوں کی تعمیر اورریل نیٹ ورک کو بہتر بنایا جارہا ہے بلکہ مواصلات کا موثر نظام بھی معرض وجود میں آرہا ہے جس سے لوگوں کو ایک دوسرے سے رابطوں میں آسانی ہوگی،یہ ملک کی معاشی اور معاشرتی ترقی کی سب سے بڑی قوت ثابت ہوگا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کا نجی شعبہ اس بات پر یقین رکھتا ہے کہ سی پیک پورے خطے میں عالمی سلامتی اورمعاشی خوشحالی کا ایک گیٹ وے ثابت ہوگا ۔ ہمایوں سعید نے عوامی جمہوریہ چین کے سفیرکو بھیجے گئے اپنے پیغام میں بھی کہا کہ پاکستان اورچین کے مابین قائم دیرینہ روابط سے کوئی بھی انکار نہیں کرسکتا اور ان تعلقات کو کسی بھی مداخلت کے بغیر مزید مضبوط ہونا چاہیئے کیونکہ دونوں ممالک کے عوام پاکستان اور چین دوستی کے رشتوں میں مزید استحکام چاہتے ہیں ۔

مزید : کامرس