ٹیکس دھندگان پر دباؤ کی پالیسی ملکی مفاد کے خلاف ہے‘خادم حسین

ٹیکس دھندگان پر دباؤ کی پالیسی ملکی مفاد کے خلاف ہے‘خادم حسین

  



لاہور(این این آئی) ممتازتاجر رہنما و پاکستان سٹون ڈویلپمنٹ کمپنی کے بور ڈ آف ڈائریکٹرز کے رکن خادم حسین نے کہا ہے کہ کاروباری سرگرمیوں میں مسلسل کمی کے باوجودموجودہ ٹیکس دہندگان سے زیادہ سے زیادہ ریونیوحاصل کرنے کی پالیسی ملکی مفادا ت کے خلاف ہے ٹیکس آمدنی بڑھانے کیلئے موجودہ ٹیکس دہندگان پر ضرورت سے زیادہ فوکس سے سرمایہ کار بددل ہورہے ہیں اور اس کے نتیجہ میں سرمائے کا فرار بڑھے گا جس سے ملکی معیشت متاثر ہوگی اور حکومت کے ریونیو میں کمی ہوگی۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے فیروز پور بورڈ کے تاجروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔خادم حسین نے کہا کہ جب ملکی معیشت ترقی نہیں کررہی بلکہ سکڑ کر 5.8فیصد سے 3فیصد کی شرح پر آگئی ہے توکاروباری برادری پر زیادہ سے محاصل نہیں بڑھائے جاسکتے۔انہوں نے کہا کہ ڈیمانڈ کم کرنے کی پالیسی سے مقامی صنعت و کاربار متاثر ہوئے۔درآمدات بھی10ارب ڈالر کم ہوئی ہیں جس سے تجارتی خسارہ کم ہوا لیکن اس سے ایف بی آر کا ٹیکس ہدف کا حصول ناممکن ہوگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 60کی دہائی میں پاکستان نے جو حیران کن صنعتی ترقی کی تھی اس میں بنیادی کردار سرمایہ کاروں نے ادا کیا تھا۔اب دوبارہ اس تاریخ کو دہرایا جاسکتا ہے۔

اس کیلئے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو ملک میں سرمایہ کاری کی درخواستیں کرنے کے ساتھ ساتھ مقامی سرمایہ کاروں پر بھی اعتماد کیا جائے اور ان کے لیے کاروباری ماحول کا ساز گار بنایا جائے اور پیداوار لاگت میں کمی کے اقدامات کیے جائیں تاکہ مقامی صنعتیں ترقی کرکے ملکی برآمدات میں اضافہ سے ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ سے ملک خوشحال و ترقی کی راہوں پر گامزن ہوسکے۔

مزید : کامرس