نوشہرہ سی اینڈ ڈبلیو ایکسین بلڈنگ کا دفتر کمیشن کا گڑھ بن گیا

نوشہرہ سی اینڈ ڈبلیو ایکسین بلڈنگ کا دفتر کمیشن کا گڑھ بن گیا

  



نوشہرہ (بیورورپورٹ)نوشہرہ سی اینڈ ڈبلیو ایکسین بلڈنگ کا دفتر کمیشن کا گڑھ بن گیا ایکسین نے سی اینڈ ڈبلیو کے ٹھیکداروں کا جینا حرام کردیا ہے کوئی کام کمیشن کے بغیر نہیں کرتا شعیب نامی کلرک ایکسین کے ایجنٹ کا کردار ادا کرکے ٹھیکداروں سے 14%یا اس سے زیادہ کمیشن کا مطالبہ کرتا ہے نوشہرہ کے ایم این ایز، ایم پی ایز سمیت سی اینڈ ڈبلیو کے اعلیٰ حکام سی اینڈ ڈبلیو کے ایکسین بلڈنگ کی کرپشن کا نوٹس لیں اس سلسلے میں سی اینڈ ڈبلیو نوشہرہ کے ٹھکیداروں جاوید خان، حاجی امیرزادہ خان، علی خان، اکبر علی، بخت باز خان، گوہر علی اور ملک مکین خان نے نوشہرہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ ایکسین سی اینڈ ڈبلیو نے اپنے دفتر سے کیشن کا گڑھ بادیا ہے اور ہر کام کمیشن وصول کرکے کرتا ہے کمیشن کے بغیر کوئی کام نہیں کرتا اور ٹھیکداروں سے کمیشن وصولی کیلئے شعیب نامی کلرک کو بٹھایا گیا ہے البتہ یہی کلرک گذشتہ 30سالوں سے اسی ایک ہی دفتر میں تغنات ہے ان کہی تبادلہ بھی نہیں ہو رہا ہے انہوں نے مزید کہا کہ ُی ٹی آئی کی سابق حکومت میں جب پرویز خان خٹک وزیر اعلیٰ تھے تو سی اینڈ ڈبلیو کے افسران اور کلرکس کا قبلہ درست ہو اتھا لیکن جب سے یہی نصیر شہزادنامی ایکسین نے چارج لیا ہے ایک بار پھر نوشہرہ سی اینڈ ڈبلیو بلڈنگ سیکشن کمیشن کا گڑھ اور اس کے اہلکار کرپشن کے بے تاج بادشاہ بن گئے ہیں کیونکہ ان کا سربراہ ایکسین بلڈنگ جو کمیشن خوری شیر مادر سمجھ کر لے رہا ہے انہوں نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان، نوشہرہ کے ایم این ایز اور ایم پی ایز سمیت سی اینڈ ڈبلیو کے تمام اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایکسین سی اینڈ ڈبلیو بلڈنگ نصیر شہزاد کے کرپشن کا نوٹس لیں بصورت دیگر ہم ٹھیکدار راست اقدام پر مجبور ہو جائیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر