قبرستانوں پر مافیا کا قبضہ ختم کرانے میں انتظامیہ مدد کرے،میئر کراچی

قبرستانوں پر مافیا کا قبضہ ختم کرانے میں انتظامیہ مدد کرے،میئر کراچی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ قبرستانوں پر مافیا کا قبضہ ختم کرانے میں انتظامیہ مدد کرے، کمشنر کراچی شہر میں کام کے حوالے سے بہت متحرک ہیں ہمارے ساتھ تعاون کریں رینجرز اور پولیس کی مدد کے بغیر شہر کے قبرستانوں کو مافیا سے خالی نہیں کرایا جاسکتا، کے ایم سی کے عملے پر فائرنگ کی جاتی ہے اور شہریوں کو لوٹا جاتا ہے اس وقت ہر ضلع میں ایک بڑے قبرستان کی ضرورت ہے،حکومت سندھ اس کے لئے زمین الاٹ کرے، عظیم پورہ قبرستان کے 4 ایکڑ حصے کو قبضہ مافیا سے واگزار کراکے 5ہزار سے زیادہ قبروں کی گنجائش نکالی گئی ہے، اس توسیعی منصوبے پر ایک کروڑ 70 لاکھ روپے کے اخراجات ہوئے ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو عظیم پورہ قبرستان کے توسیعی منصوبے کے افتتاح کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع سے ڈپٹی میئر کراچی سید ارشد حسن، میٹروپولیٹن کمشنر ڈاکٹر سید سیف الرحمن، میڈیکل اینڈ ہیلتھ کمیٹی کی چیئرپرسن ناہید فاطمہ، بلدیہ کورنگی کے چیئرمین نیئر رضا اور دیگر عوامی نمائندے اور معززین علاقہ کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ میئر کراچی نے کہا کہ قبرستانوں کی دیکھ بھال اور نئے قبرستانوں کا قیام بلدیہ کی ذمہ داری ہے، ہم اپنی اس ذمہ داری کو پورا کرنا چاہتے ہیں تاہم ہمارے پاس جو وسائل ہیں ان میں رہتے ہوئے یہ ذمہ داریاں پوری کرنا مشکل ہے گزشتہ سال کا اے ڈی پی کا آخری کوارٹر بھی نہیں ملا اس سال کا پہلا کوارٹر اور اب دوسرا بھی شروع ہو چکا حکومت سندھ سے کچھ نہیں ملا،پہلے تو آدھی رقم مل جاتی تھی اب مکمل ہی بند ہو گیا، اے ڈی پی نہ ملنے کے باعث تین ماڈل قبرستانوں کا کام رکا ہوا ہے، انہوں نے کہا کہ ہم نے چکرا گوٹھ، محمد شاہ قبرستان اور عظیم پورہ قبرستان سے مافیا کا قبضہ ختم کراکر ان کی بھی توسیع کی ہے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر