وکلا ء پر تشدد کرنیوالے ڈاکٹرز کی گرفتاری کیلئے آج تک کی مہلت

وکلا ء پر تشدد کرنیوالے ڈاکٹرز کی گرفتاری کیلئے آج تک کی مہلت

  



لاہور(نامہ نگار)وکلاء پر پی آئی سی کے ڈاکٹروں کے تشدد کے معاملے پرگزشتہ روز لاہور بار نے اپنا احتجاج موخر کرتے ہوئے ڈاکٹرز کی گرفتاری کیلئے پولیس کوایک بار پھر مہلت دیدی،لاہور بار کے صدر عاصم چیمہ کاکہنا ہے کہ اگر اس پر عملدرآمد نہ ہوا تووکلاء آئندہ کا لائحہ عمل دیں گے۔یادرہے کہ ایک روز قبل صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے ڈاکٹر ز کی گرفتاری کی یقین دہانی کروائی تھی جس کے بعد وکلاء نے سول سکرٹریٹ کے باہر سے اپنا احتجاج ختم کردیاتھا۔قبل ازیں لاہور بار کے صدر عاصم چیمہ کی زیرصدارت ایوان عدل میں اجلاس منعقد ہوا،جس میں صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت سے ہونے والے مذاکرات پر بھی غور کیا گیا،لاہوربار کے صدر عاصم چیمہ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ کسی کے ساتھ نہیں ہو گا،ہم اپنی قانونی کارروائی سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،ہم نے ملزمان نامزد کردیئے ہیں،بدھ کا دن صرف اس لئے دیا گیا جو نامزد ملزمان ہیں ان کو فوری گرفتار کر لیا جائے،اجلاس میں وکلا نے نعرہ بازی کی کہ "اللہ کا قانون ہے،خون کا بدلہ خون ہے "اور مطالبہ کیا کہ پی آئی سی جایاجائے،جس پر لاہور بار کے صدر نے کہا کہ ہم نے سوچ سمجھ کر فیصلہ کرنا ہے میں جو فیصلہ کروں گاوکلاء کی مشاورت سے کروں گا، میں اپنے ساتھیوں کو ایسی جگہ نہیں لے جانا چاہتا جہاں سے واپسی نہ ہوسکے،میرے کندھے پر جو ذمہ داری ہے اس کو اچھے طریقے سے نبھاؤں گا، میں آپ لوگوں کو ابھی اس جگہ نہیں لے جانا چاہتا، آج شام تک اگر ملزمان گرفتار نہ ہوے تو ہم خود ایم ایس کو جاکراسکے آفس سے اسے گرفتار کرائیں گے،میرا مستقبل آپ کے ساتھ ہے،میں آپ کو یقین دہانی کراتا ہوں کہ میں ایک قدم بھی پیچھے نہیں ہو گا،اجلاس میں ملزمان کی گرفتاری شام تک کرنے کی مہلت دیتے ہوے اجلاس ملتوی کر دیا گیا۔اجلاس میں سیکریٹری مقصود کھوکھر نے وکلا ء کو بتایا کہ وکلا پر حملہ کرنے والے ڈاکٹروں کی نشاندہی کی جا رہی ہے تاکہ ان کو گرفتار کرنے کیلئے نام پولیس کو دئیے جائیں،انہوں نے مزید کہاکہ وکلا کو اتنا کمزور سمجھ کر یہ لوگ تصور کر رہے ہیں کہ وکلا ء کو اور مزید ماریں گے،افسوس سے کہوں گا یہ ان کی غلط سوچ ہے،ہم نے تو ابھی اپناپہلابدلہ بھی نہیں لیا۔

وکلا اتحاد

مزید : صفحہ آخر