کامونکے:9 سالہ بچی بداخلاقی کے بعد قتل، ورثاء کا نعش سڑک پر رکھ کر احتجاج

کامونکے:9 سالہ بچی بداخلاقی کے بعد قتل، ورثاء کا نعش سڑک پر رکھ کر احتجاج

  



کامونکے(نمائندہ خصوصی، نمائندہ پاکستان) نو سالہ بچی اغواء اوربداخلاقی کے بعد قتل، ورثاء نے نعش جی ٹی روڈ پر رکھ کر روڈ کو بلاک کر دیا، پولیس کی بروقت کاروائی ملزم گرفتار،انتظامیہ کی طرف سے انصاف کی یقینی دہانی پر ورثاء نے روڈ کھول دیا۔بتایاگیاہے کہ کوٹ محمد شفیع موڑ ایمن آبا د کے محمد اقبال کی 9 سالہ بیٹی (م)گھر سے باہر دوکان پر چیز کھانے کے لیے گئی۔اور اسی محلے کا عبدالغنی اُسے اغواء کر کے لے گیا اور بداخلاقی کرنے کے بعد گلہ دبا کر قتل کر دیا۔ ورثاء بچی کی تلاش میں مارے مارے پھرتے رہے اور ایمن آباد پولیس اسٹیشن میں مقدمہ درج کروادیا جس پر ایمن آباد پولیس کے ایس ایچ او زاہد علی شاہ نے اپنی ٹیم کے ہمراہ ملزم کو بر وقت گرفتار کر کے تفتیش شروع کر دی جس پر ملزم نے اعتراف جرم کرتے ہوئے نعش کی نشاندہی بھی کر دی۔پولیس نے نعش قبضہ میں لے کر پوسٹمارٹم کروانے کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کر د ی بعد ازاں ورثاء نے نعش کو جی ٹی روڈ موڑ ایمن آباد چوک میں رکھ کر دو طرفہ ٹریفک بند کر دی اور احتجاج شرو ع کر دیا اور ملزم کو قرار واقعی سزا کا مطالبہ کیا جو بعد ازاں پولیس کے اعلیٰ افسران موقع پر پہنچ گئے پولیس کی طرف سے انصاف کی یقین دہانی پر مظاہر ین نے مظاہرہ ختم کرتے ہوئے روڈ کھو ل دیا۔

کامونکے بچی

مزید : صفحہ آخر