مسائل کا واحد حل قران و سنت پر عمل پیرا ہونے سے ہے، نور الحق قادری

مسائل کا واحد حل قران و سنت پر عمل پیرا ہونے سے ہے، نور الحق قادری

  

نوشہرہ کینٹ (آن لائن) وفاقی وزیر مذہبی امور اور بین المذاہب ہم آہنگی پیر نور الحق قادری نے کہا ہے کہ اسلام امن کا درس دیتا ہے،امن سے ہی ترقی آتی ہے۔حضور کی زندگی عالم اسلام کے لیے مشعل راہ ہے۔پیغمبراسلام کسی خاص قوم،نسل یا مذہب نہیں بلکہ انسانیت کے لیے ایک نمونہ کامل ہیں نبی پاک ؐنے دنیا کے لیے امن کا پیغام لائے اور آپ ؐنے انسانیت کو عدل، انصاف اور برادری کا درس دیا۔حضرت محمد ؐ نے امن ومحبت کادرس دیاجس پر عمل پیراہوکر معاشرہ کوامن وآشتی کاگہوارہ بنایا جاسکتاہے۔ نبیؐ کی سیرت مطہرہ ہمارے لیے عمل کا بہترین نمونہ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نوشہرہ پبی کے علاقے رحمت آباد کے جامعہ کریمیہ غفوریہ میں 31 ویں سالانہ رحمت العالمین ؐ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔31 ویں سالانہ رحمت العالمین ؐکانفرنس سیسابقہ وفاقی وزیر مذہبی امور اعجاز الحق اور سابقہ گورنر خیبر پختون خوا اقبال ظفر جھگڑا نے بھی خطاب کیا۔رحمت العالمین ؐ کانفرنس میں پختونخوا کے مشہور نعت خوانوں نے نعتیں پیش کی جبکہ اس پروقار مذہبی کانفرنس میں جامعہ کریمیہ سے فارغ ہونے والے طلباء کی دستار بندی کے ساتھ ساتھ سرٹفیکٹ اور عمرے کے ٹکٹیں بھی تقسیم کی گئی۔انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان رب العالمین کی جانب سے مسلمانوں کے لیے ایک تحفہ سے کم نہیں۔پاکستان ایک نظریاتی اسلامی ریاست ہے۔ہم قران و سنتؐ پر عمل کرکے ہی کاکامیاب قوم بن سکتے ہیں۔ہمارے مسائل کا واحد حل قران و سنت پر عمل پیرا میں پوشیدہ ہے۔انہوں نے کہا کہ نبی ؐسے عشق و محبت اور فرمانبرداری ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔

نور الحق قادری

اسلام آباد(ڈویلپمنٹ سیل) وفاقی وزیر مذہبی امور ڈاکٹر نور الحق قادری نے کہا کہ ایران، عراق کے زائرین کے لئے ایک جامع حکمت عملی مرتب کی جارہی ہے تاکہ ان ممالک کو جانے والے زائرین کی مشکلات میں کمی ہو اور وہ زیادہ سے زیادہ سہولیات سے مستفید ہو سکیں۔انہوں نے یہ بات آج زیارت مینجمنٹ پالیسی کی تشکیل کے لئے کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے کہا کہ وزارت مذہبی امور اس فریم ورک اور سفارشات کو حتمی شکل دینے کے بعد کابینہ کو منظوری کے لئے بھیجے گی۔ اجلاس میں وفاقی سیکرٹری مذہبی امور مشتاق احمد، ایڈیشنل سیکرٹری داؤد محمد بریج، جوائنٹ سیکرٹری امجد خان، علامہ شہنشاہ نقوی، ڈاکٹر غضنفر مہدی، راجہ ناصر عباس، علامہ مفتی کفایت حسین نقوی، آغا رضی جعفر نقوی، علامہ امین شہیدی، علامہ محمد حسین اکبر، آغا عبداللہ رضوانی، علامہ محمد شیخ شفا نجفی، سید اخلاق حسین کاظمی، راجہ بشارت امامی، مولانا منظور عباس علوی، آغا ظہور خان، آغا خورشید جوادی، مولانا تنویرالکاظم، آغا جمعہ اسدی، وزارت مذہبی امور کے ترجمان عمران صدیقی اور سیکشن افسر اسد حسین ملک نے شرکت کی اور اپنی تجاویز پیش کیں۔

ڈاکٹر نور الحق قادری

مزید :

صفحہ آخر -