معاشی استحکام کیلئے ایس ایم ای کاجی ڈی پی میں 30فیصد حصہ لازمی، شبر زیدی

معاشی استحکام کیلئے ایس ایم ای کاجی ڈی پی میں 30فیصد حصہ لازمی، شبر زیدی

  



اسلام آباد(آن لائن) چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے کہاہے سمال میڈیم سیکٹر کا جی ڈی پی میں تیس فیصد سے زیادہ ہونا چاہیے،سمال میڈیم سیکٹر مکمل دستاویزی نہیں ہو گا تو قرض کا تناسب نہیں بڑھے گا،حکومت نے ایس ایم ای کا گیپ پورا کرنے کیلئے بہت سی ٹیکس ایمنسٹی سکیموں دیں،ایس ایم ای کیلئے اکاؤنٹنگ اور ٹیکس کا موثر نظام متعارف کرانا ہوگا۔گزشتہ روز چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے پاکستان انویٹیو فنانس فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سمال میڈیم سیکٹر میں کم قرض کی وجوہات غیر دستاویزی ہونا ہے۔انہوں نے کہاکہ اکتیس لاکھ انڈسٹریل، کمرشل کنزیومر ہیں،اکتیس لاکھ میں صرف تینتالیس ہزار کنزیومر ٹیکس دے رہے ہیں۔ سمال میڈیم سیکٹر مکمل دستاویزی نہیں ہو گا تو قرض کا تناسب نہیں بڑھے گا۔ سمال میڈیم سیکٹر کے لوگ ٹیکس سسٹم میں شامل ہی نہیں ہونا چاہ رہے۔ ہمارے ملک میں گزشتہ ادوار ٹیکس سسٹم انتہائی مشکل تھا۔ایس ایم ای کو وقت دینا ہوگا اپنے اکاونٹنگ سسٹم کو بہتر بنا سکیں،ٹیکس سسٹم وہ ایک عنصر ہے جو ایس ایم ای کی ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہے،ٹیکس کا نظام سادہ کرنے پر کام کر رہے ہیں۔

شبر زیدی

مزید : صفحہ اول