آرمی چیف کی مدت ملازمت کا معاملہ، چھ ماہ کو تین سال ہی سمجھیں: شیخ رشید احمد

آرمی چیف کی مدت ملازمت کا معاملہ، چھ ماہ کو تین سال ہی سمجھیں: شیخ رشید احمد
آرمی چیف کی مدت ملازمت کا معاملہ، چھ ماہ کو تین سال ہی سمجھیں: شیخ رشید احمد

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) آرمی چیف کی مدت ملازمت سے متعلق کیس کا فیصلہ آنے وفاقی وزیر ریلوے اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا کہ 6 ماہ کو 3 سال ہی سمجھیں، چھ ماہ کے ساتھ اڑھائی سال بھی لگا لیے جائیں،اس معاملے میں کوتاہی ہوئی ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ کسی نے پہلے توسیع کو چیلنج نہیں کیا تھا۔ 

فیصلہ آنے پر نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ قانون سازی کے لیے اپوزیشن کے پاس جانا ہے لیکن  ضروری نہیں کہ عمران خان جائے ، مین مسئلہ وہی تھا جو  قلعہ فتح ہوگیا، اس معاملے میں مسلم لیگ ن بھی آن بورڈ ہے ، فیصلہ کچھ اور ہوتا تو اس کے لیے بھی تیار تھے ۔ 

ایک سوال کے جواب میں شیخ رشید کاکہناتھاکہ کوتاہی ہوئی ہے اور اس کے ذمہ داران افسران ہیں، کئی لوگ فروغ نسیم پر ملبہ ڈال رہے ہیں اور وہ سراسر غلط ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ماضی میں کبھی کسی نے توسیع چیلنج نہیں کی ، اس وجہ سے کوتاہی ہوئی ہے ۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ ان کے پاس بھی ایک تعویز ہے ، مولانا فضل الرحمان کا کوئی مسئلہ نہیں۔ 

مزید : قومی