وہ مہنگا ترین ریسٹورنٹ جو عام لوگوں کی بکنگ ہی نہیں کرتا، داخلے کے لئے کیا کرنا پڑتا ہے؟ جان کر آپ کو بے حد حیرت ہوگی

وہ مہنگا ترین ریسٹورنٹ جو عام لوگوں کی بکنگ ہی نہیں کرتا، داخلے کے لئے کیا ...
وہ مہنگا ترین ریسٹورنٹ جو عام لوگوں کی بکنگ ہی نہیں کرتا، داخلے کے لئے کیا کرنا پڑتا ہے؟ جان کر آپ کو بے حد حیرت ہوگی

  



ٹوکیو(مانیٹرنگ ڈیسک) جاپان کے معروف ترین ہوٹل ’سوکیاباشی جیرو‘کانام 12سال بعد مشیلین گورمے گائیڈسے نکال دیا گیا۔میل آن لائن کے مطابق مشیلین گائیڈ (Michelin guide)2020ءمیں اس لگژری ہوٹل کا نام اس لیے شامل نہیں کیا گیا کیونکہ ہوٹل نے عام پبلک کے لیے اپنی سروس عملاً معطل کر دی تھی اور اب صرف خاص لوگوں کو ہی وہاں بکنگ ملتی ہے۔

سوکیاباشی جیرو 2007ءسے مسلسل تین سٹار لے رہا تھا اور مشیلین گورمے گائیڈ میں اس کا نام آ رہا تھا۔ سابق امریکی صدر باراک اوباما جب جاپان کے دورے پر گئے تھے تو انہوں نے بھی جاپانی وزیراعظم شینزو ابے کے ہمراہ اس ریسٹورنٹ پر کھانا کھایا تھا۔ مشیلین گائیڈ کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ ”ریسٹورنٹ نے اب بھی اپنے تین سٹار برقرار رکھے ہوئے ہیں مگر اب وہ چونکہ عام لوگوں کے لیے سروس نہیں دے رہا چنانچہ ہمارے قواعدوضوابط کے مطابق اب وہ ہماری فہرست میں شامل نہیں ہو سکتا۔“

اس حوالے سے سوکیاباشی جیرو کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ”ہمارے ہوٹل میں چونکہ ایک وقت میں صرف10لوگوں کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہمیں عام لوگوں کے لیے بکنگ بند کرنی پڑی اوراسی وجہ سے مستقبل قریب میں بھی اس پابندی کے برقرار رہنے کا امکان ہے۔“واضح رہے کہ سوکیاباشی جیرو ٹوکیو کے گینزا ڈسٹرکٹ میں 1965ءمیں کھولا گیا تھا۔ یہ ہوٹل سوشی بنانے کے ماہر جاپانی شیف جیرو اونو نے قائم کیا تھا جن کی عمر اب 90کی دہائی میں ہے۔ اس ہوٹل پر سوشی کے علاوہ دیگر انواع و اقسام کے لذیذ کھانے بنائے جاتے ہیں جو اس ہوٹل کا ہی خاصا ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس