عدالت نے راستے بند نہیں کیے،ایک سے ڈیڑھ ماہ کے دوران قانون سازی ہو جائے گی: انور منصور خان

عدالت نے راستے بند نہیں کیے،ایک سے ڈیڑھ ماہ کے دوران قانون سازی ہو جائے گی: ...
عدالت نے راستے بند نہیں کیے،ایک سے ڈیڑھ ماہ کے دوران قانون سازی ہو جائے گی: انور منصور خان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اٹارنی جنرل آف پاکستان انور منصور خان نے کہا ہے کہ آج کا فیصلہ بہت تاریخی ہے،چھ ماہ کی توسیع دینے کا مقصد عدالت نے راستے بند نہیں کیے، ایک سے ڈیڑھ ماہ کے دوران قانون سازی ہو جائے گی۔

نجی ٹی وی  سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انور منصور خان نے کہا کہعدالت نے آرمی چیف کی مدت اور طریقہ کار کا قانون بنانےکو کہا،آئندہ سے نئے قانون کے تحت تقرری ہوگی۔اُنہوں نے کہا کہپچھلے ستر سال سے یہی آرڈر پاس ہو رہے تھے، وہی ہم نے کیا، حکومت نے اپنی طرف سے کوئی نئی چیز شامل نہیں کی تھی۔ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ عدالت نے فیصلہ دیا اس پر عملدرآمد کریں گے، سادہ اکثریت کے ساتھ قانون پاس ہو جائے گا، کوئی ایشو نہیں ہے۔اُن کا کہنا تھا کہ پاکستان آرمی ایک سیکیورٹی کا ادارہ ہے،عالمی سطح پر بھی ہمارے سیکیورٹی ادارے کی ایک پہچان ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد