حکمرانوں نے ریاست کو ڈبو کر رکھ دیا ،جعلی پارلیمنٹ قانون سازی نہیں کر سکتی:مولانا فضل الرحمان

حکمرانوں نے ریاست کو ڈبو کر رکھ دیا ،جعلی پارلیمنٹ قانون سازی نہیں کر ...
حکمرانوں نے ریاست کو ڈبو کر رکھ دیا ،جعلی پارلیمنٹ قانون سازی نہیں کر سکتی:مولانا فضل الرحمان

  



سکھر(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کےسربراہ مولانافضل الرحمان نے ایک بارپھرفوری انتخابات کامطالبہ کرتےہوئےکہاکہ ناجائز اور نااہل حکمرانوں نے ریاست کو ڈبو کر رکھ دیا ہے،جعلی پارلیمنٹ قانون سازی نہیں کر سکتی،جو دوسروں کوبدعنوان کہہ رہےہیں اُنہیں اپنی چوری نظر ہی نہیں آ رہی،نیب کو سیاستدانوں کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے ۔

سکھر میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئےمولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ملک میں کوئی احتساب  نہیں ہو رہا ،یہ انتقام ہے،موجودہ صورت حال میں اپوزیشن پوری طرح یکسو ہے،جعلی پارلیمنٹ قانون سازی نہیں کر سکتی،نئے انتخابات کرائے جائیں،اصل پارلیمنٹ آکر قانون سازی کرے گی۔اُنہوں نے کہا کہناجائز اور نااہل حکمرانوں نے ریاست کو ڈبو کر رکھ دیا ہے، جس طرح معیشیت کی تباہی نے سوویت یونین کو ڈبو دیا تھا لیکن حکمران یاد رکھیں کہ ابھی پاکستان کی بقاء کی جنگ لڑنے والے اور وطن کی خاطر مرمٹنے والے زندہ ہیں۔اُنہوں نے کہا کہملک کو نااہلوں کی سازشوں کا شکار نہیں ہونے دیں گے،احتساب کے نام پر ملک کی معیشت کا پہیہ جام کر کے رکھ دیا ہے،فارن فنڈنگ کیس اب تک التوا کا شکار ہے اور دوسروں کو چور کہنے والے خود اربوں روپے باہر سے فنڈنگ لے چکے ہیں،جو دوسروں کو بدعنوان کہہ رہے ہیں اِنہیں اپنی چوری نظر ہی نہیں آ رہی ،فارن فنڈنگ کیس اب تک التوا کا شکار ہے،ریاست مدینہ کی بات کرنے والے خود اپنی چوری کا جواب نہیں دے رہے،ایسے حکمرانوں سے نجات حاصل کرنا ہی بہتر ہے جو کشمیر کو بیچ کر اب مگر مچھ کے آنسو بہا رہے ہیں،سرینگر کو تو لینے کا تصور ختم ہو چکا ،اَب مظفر آباد بچانے کی فکر لگ گئی ہے،آج ہندوستان گلگت بلتستان کو حاصل کرنے کی باتیں کر رہا ہے جبکہ ہماری خارجہ پالیسی تباہ ہو چکی ہے۔اُنہوں نے کہا کہاپوزیشن متفق ہے کہ ناجائز حکومت نہ آج قبول ہے نہ کل ہوگی .

مزید : قومی