’کورونا وائرس چین سے نہیں بھارت سے پھیلا‘ سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ ہنگامہ برپا ہوگیا

’کورونا وائرس چین سے نہیں بھارت سے پھیلا‘ سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ ...
’کورونا وائرس چین سے نہیں بھارت سے پھیلا‘ سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ ہنگامہ برپا ہوگیا

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ اور اٹلی کے بعد چینی سائنسدانوں نے کورونا وائرس کے بھارت سے پھیلنے کا دعویٰ کر دیا۔ میل آن لائن کے مطابق چین کی اکیڈمی آف سائنسز کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ممکنہ طور پر کورونا وائرس 2019ءکے موسم گرما میں انڈیا میں پیدا ہوا اور وہاں سے دنیا بھر میں پھیلا ہے۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ 2019ءکے موسم گرما کے دوران آنے والی ’ہیٹ ویو‘ کے دوران انسانوں میں پھیلا جب جانور اور انسان ایک ہی جگہ سے گندہ پانی پینے پر مجبور ہوئے۔

چینی سائنسدانوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ”بھارت کا نظام صحت انتہائی خراب ہونے اور نوجوان آبادی کی شرح زیادہ ہونے کی وجہ سے کورونا وائرس کی کئی مہینوں تک تشخیص ہی نہیں ہو سکی اور وہ خفیہ طور پر لوگوں میں پھیلتا رہا اور وہاں سے دیگر ممالک کو منتقل ہو گیا۔“ رپورٹ کے مطابق دیگر ممالک کے سائنسدانوں نے ان چینی سائنسدانوں کے دعوے کی سختی سے تردید کر دی ہے۔ برطانیہ کی گلاسگو یونیورسٹی کے پروفیسر ڈیوڈ رابرٹسن نے کہا ہے کہ ’چینی سائنسدانوں کی تحقیق ناقص ہے۔ اس سے کوئی ایک بھی ایسا ثبوت میسر نہیں آیا جس سے ثابت ہو سکے کہ وائرس بھارت سے پھیلا۔ “ واضح رہے کہ دنیا میں کورونا وائرس کا پہلا کیس گزشتہ سال دسمبر میں چین کے شہر ووہان میں سامنے آیا تھا۔ 

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -