نسلہ ٹاور کیلئے بینکوں کے ذریعے خرید وفروخت ہوئی لیکن سپریم کورٹ رجسٹری کی پارکنگ نالے پر بنی ہے، ایم کیوایم کے فیصل سبزواری بھی بول پڑے 

نسلہ ٹاور کیلئے بینکوں کے ذریعے خرید وفروخت ہوئی لیکن سپریم کورٹ رجسٹری کی ...
نسلہ ٹاور کیلئے بینکوں کے ذریعے خرید وفروخت ہوئی لیکن سپریم کورٹ رجسٹری کی پارکنگ نالے پر بنی ہے، ایم کیوایم کے فیصل سبزواری بھی بول پڑے 
سورس: Twitter/@faisalsubzwari

  

کراچی (ویب ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کے رہنما فیصل سبزواری کا کہنا ہے کہ نسلہ ٹاور کے لیے این او سی دیکھ کر بینکوں کے ذریعے خریدوفروخت ہوئی، سپریم کورٹ کراچی رجسٹری کی پارکنگ نالے پر بنی ہوئی ہے۔

  پریس کانفرنس کرتے ہوئے فیصل سبزواری نے کہا کہ سندھ حکومت چاہتی ہے تو یک جنبشِ قلم ریگولرائز  کر دیتی ہے، حکومتیں انٹروینر بنیں اور کہیں یوٹیلیٹی کنکشز نہیں کاٹنے دیں گے،  سپریم کورٹ سے عدل کی درخواست کرتے ہیں، اورنگی، گجر نالے پر قبضہ غلط ہے، لیکن چھت فراہمی کی ذمہ داری ریاست کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ  متعلقہ اداروں کے اجازت نامے دیکھ کر فلیٹ خریدے گئے،  آئندہ سے این او سی پر کوئی کیا بھروسہ کرے گا؟ اس معاملے پر سوموٹو لیں، فل بینچ بنائی جائے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -