چٹا گانگ ٹیسٹ ، تیسرے روز کے اختتام پر بنگلہ دیش کو 83 رنز کی برتری حاصل 

چٹا گانگ ٹیسٹ ، تیسرے روز کے اختتام پر بنگلہ دیش کو 83 رنز کی برتری حاصل 
چٹا گانگ ٹیسٹ ، تیسرے روز کے اختتام پر بنگلہ دیش کو 83 رنز کی برتری حاصل 

  

چٹاگانگ  ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) دورہ بنگلہ دیش پر موجود پاکستانی کرکٹ ٹیم اپنے پہلا ٹیسٹ  میچ کھیل رہی ہے جس میں تیسرے روز کے اختتام پر بنگلہ دیشی ٹیم کو 83 رنز کی برتری حاصل ہے ۔

بنگلہ دیش کی ٹیم دوسری اننگز میں مشکلات کا شکار نظر آرہی ہے جہاں دن کے اختتام پر اس کے 39 سکور پر 4 کھلاڑی آؤٹ ہیں ۔  بنگلہ دیش نے دوسری اننگز کا آغاز  44 سکور کی برتری سے کیا  مگر  شاہین شاہ آفریدی نے ایک ہی اوور میں دو بنگالی بلے باز آؤٹ کر کے اپنی دھاک بٹھا دی ۔ شاہین آفریدی نے پانچویں اوور کی تیسری گیند پر اوپنر شادمان اسلام کو ایل بی ڈبلیو کر دیا جبکہ ایک گیند کے بعد دوسری گیند پر نجم الحسین کو بھی پویلین کی راہ دکھا دی ۔ نجم کا کیچ عبداللہ شفیق نے تھاما ۔ 

چھٹے اوور کی آخری گیند پر حسن علی نے مومن الحق کو میدان بدر کر دیا ، مومن الحق بغیر کوئی سکور کئے پویلین لوٹے ، ان کا کیچ اظہر علی نے پکڑا ۔ گیارہویں اوور کی پہلی گیند پر شاہین شاہ آفریدی نے سیف حسن کا کیچ خود ہی تھام لیا ۔

اس سےقبل   آج کھیل کے تیسرے دن  پاکستانی ٹیم بنگلہ دیش کے 330 رنز کے جواب میں 286 رنز بنا کر آل آؤٹ ہو گئی ،  ابتدائی دو سیشنز میں پاکستانی وکٹیں درخت کے پتوں کی طرح جھڑتی نظر آئیں ۔ دن کے آغاز میں ہی  فواد عالم صرف 8 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے ہیں ، محمد رضوان بھی 5 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے ۔  پاکستانی ٹیم کی چھٹی وکٹ اوپنر عابد علی کی صورت میں گری ، عابد علی نے 133 رنز بنائے ۔ حسن علی  سٹیمپ جبکہ ساجد خان کیچ آؤٹ ہوئے ۔نعمان علی نے بھی 8 رنز بنائے ۔

پاکستان کی جانب سے فہیم اشرف نے ڈٹ کر کھیلنے کی کوشش کی ، ساتویں نمبر پر بلے بازی کیلئے آنے والے آل راونڈر نے  38 رنز بنائے ، فہیم پاکستان کی جانب سے آؤٹ ہونے والے دسویں کھلاڑی تھے ۔

گزشتہ روز قومی ٹیم کے اوپنرز عابد علی اور عبداللہ شفیق نے  146  رنز کا آغاز فراہم کیا جہاں عبداللہ شفیق 52 سکور بنا کر  تیج الاسلام کی گیند پر ایل بی ڈبیو  ہو گئے ، اگلی ہی گیند پر اظہر علی بھی ایل بی ڈبلیو ہو کر چلتے بنے ۔ کپتان بابر اعظم بھی  10 رنز بنا کر مہدی حسن مرزا کی گیند پر کلین بولڈ ہو گئے ۔ تیج الاسلام نے 7 بلےبازوں کو پویلین کی راہ دکھائی ۔ 

اس سے قبل بنگلہ دیش نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور پوری ٹیم 330 رنز بنا کر آوٹ ہو گئی۔ بنگلہ دیش کی پہلی چار وکٹیں پہلے سیشن میں ہی گر گئیں اور امید کی جارہی تھی کہ شائد بنگلہ دیش سینچری بھی بمشکل ہی بنا پائے گی۔ شادمان اسلام اور سیف حسن نے میدان میں اتر کر کھیل کا آغاز کیا لیکن دونوں اوپننگ بلے باز اور تیسرے نمبر پر آنے والے نجم الحسن 14، 14 رنز ہی بنانے میں کامیاب ہوئے اور پولین لوٹ گئے ۔چوتھے نمبر پر آنے والے مومن الحق بھی ٹیم کیلئے کچھ نہ کر سکے اور صرف 6 رنز بنا کر ساجد خان کی گیند پر آوٹ ہو گئے ۔

 وکٹ کیپر لٹن داس اور مشفیق الرحمان نے کمان سنبھالی اور میچ کا پانسہ ہی پلٹ دیا، د ونوں کھلاڑی پورا دن جم کر کھیلتے رہے اور پہلے روز کا اختتام 253 رنز پر کیا ، کھیل کے دوسرے روز  صبح دونوں کھلاڑیوں نے میدان میں اتر کر دوبارہ آغاز کیا لیکن لٹن داس گزشتہ روز کی طرح بیٹنگ جاری نہ رکھ سکے اور کھیل کے دوسرے اوور میں ہی حسن علی کی گیند پر 114 بنا کر ایل بی ڈبلیو ہو گئے ۔یوں لٹن داس اور مشفیق الرحمان کی 206 رنز کی پارٹنر شپ ہوئی جس نے بنگلہ دیشی ٹیم کو نئی امید دیدی ۔ ان کا بھر پور ساتھ نبھانے والے مشفیق الرحمان اپنی سینچری مکمل کرنے میں کامیاب نہیں ہوئے اور وہ بھی ان کے پیچھے 91 رنز پر فہیم اشرف کی گیند پر کیچ آوٹ ہو کر پولین لوٹ گئے ۔اس جوڑی کے بعد بنگلہ دیشی ٹیم سنبھل نہیں پائی لیکن پھر بھی بہتر کھیل پیش کرتے ہوئے 330 رنز بنانے میں کامیاب ہوئی۔ ان دونوں کھلاڑیوں کے علاوہ مہدی حسن نے 38 رنز بنائے اور تیج السلام 11 رنز ہی بنا پائے۔

پہلی اننگز میں پاکستا ن کی جانب سے  بہترین باولنگ کا مظاہر حسن علی نے کیا جنہوں نے 20.4 اوورز میں 51 رنز دیتے ہوئے پانچ کھلاڑیوں کو پولین کی راہ دکھائی ،شاہین شاہ آفریدی اور فہیم اشرف نے دو دو کٹیں حاصل کیں جبکہ ساجد خان ایک کھلاڑی کو آوٹ کرنے میں کامیاب ہوئے ۔

مزید :

کھیل -