آسٹریا میں بھی نئے کورونا وائرس او میکرون کا پہلا کیس سامنے آگیا 

آسٹریا میں بھی نئے کورونا وائرس او میکرون کا پہلا کیس سامنے آگیا 
آسٹریا میں بھی نئے کورونا وائرس او میکرون کا پہلا کیس سامنے آگیا 

  

ویانا(اکرم باجوہ) آسٹریا کے صوبہ ٹائرول میں نئے کورونا وائرس اومیکرون کا پہلا مشتبہ کیس سامنے آگیا۔افریقہ کی تمام پروازوں پر پابندی لگادی گئی

آسٹریا کے صوبہ ٹائرول کے ضلع شواز میں ایک شہری میں نئے کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جو کہ جنوبی افریقہ سے واپس آیا ہے ۔یاست ٹائرول کے مطابق انسبرک وائرولوجی ڈیپارٹمنٹ کے ابتدائی ٹیسٹ کے بعد ایک خاص شبہ تھا کہ یہ وائرس کی نئی تبدیلی ہو سکتی ہے۔متاثرہ شخص جنوبی افریقہ سے واپسی کے بعد سے اپنے گھر پر ہی موجود ہے ا ور ابھی تک اس کو کوئی علامت ظاہر نہیں ہوئی ۔

بیلجیم پہلا یورپی ملک تھا جس نے جمعہ کو اومیکرون کیس کی تصدیق کی تھی۔تاہم نیدرلینڈز کو خاصی تشویش کی نگاہ سے دیکھا جا رہا ہے جہاں جمعہ کو جنوبی افریقہ سے آنے والی دو پروازوں کے 600 مسافروں میں سے 61 میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔ریپڈ ٹیسٹوں نے اس شبہ کی تصدیق کی ان میں نئے وائرس کی علامات ہیں۔ ڈچ حکام کو اس وائرس کے بارے میں 95 فیصد یقین ہے کہ یہ نیا وائرس ہوسکتا ہے۔

بہت سے یورپی ممالک کی طرح آسٹریا نے بھی ہفتے کے روز خود کو جنوبی افریقہ سے سیل کر دیا اور لینڈنگ پر پابندی لگا دی۔ماہر وائرولوجسٹ نوربرٹ نووٹنی نے جمعہ کی شام میڈیا کو کہا کہ انکو خدشہ ہے کہ نئی قسم کا وائرس ایک سے دو ہفتوں میں آسٹریا پہنچ جائے گا۔آسٹرین وزیراعظم الیگزینڈر شلنبرگ نے کہا کہ آسٹریا میں وائرس کی نئی شکل آنے سے پہلے میں سب سے اپیل کرتا ہوں کہ اب ہم سب پر منحصر ہے کہ جتنی جلدی ممکن ہو ویکسین کروا کر مل کر اس کا مقابلہ کریں۔ جنوبی افریقہ سے واپس آنے والوں کے لیے ٹیلی فون ہاٹ لائن قائم کردی گئی ہے۔ ہفتہ کی دوپہر تک 300 لوگ پہلے ہی ہارٹ لائن پر رجسٹر ہو چکے ہیں۔ اور وہاں آپ کو تمام معلومات ملیں گی کہ سرکاری پی سی آر ٹیسٹ کے لیے کہاں جانا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -