موسمیاتی تبدیلی کے باعث کرہ ارض اور انسانوں کو خطرہ لاحق ہے: شازیہ مری 

  موسمیاتی تبدیلی کے باعث کرہ ارض اور انسانوں کو خطرہ لاحق ہے: شازیہ مری 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


       کراچی (اسٹاف رپورٹر) وفاقی وزیر برائے تخفیف غربت اور سماجی تحفظ اورچیئرپرسن بینظیر انکم سپورٹ پروگرام شازیہ مری کی اسپین کے شہر میڈرڈ میں جاری 26 ویں سوشلسٹ انٹرنیشنل کانگریس کے اجلاس میں شرکت۔ وفاقی وزیر نے سوشلسٹ انٹرنیشنل کے اہم  اجلاس کے بعد اپنے خطاب میں عالمی سطح پر جاری جنگوں اور تنازعات سے متاثرہ خواتین اوربچوں کے ساتھ یکجہتی کا کیا اور پاکستان میں موسمیاتی تبدیلی کے تباہ کن اثرات پر بھی تفصیلی بات کی۔وفاقی وزیرشازیہ مری کا خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ فلسطین، جموں و کشمیر اور پوری دنیا کی خواتین اور بچوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں کیونکہ وہاں پر انہیں جنگوں اور تنازعات کے نتیجے میں تشدد اور ہراساں کیا جا رہا ہے۔ موسمیاتی تبدیلی پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ موسمیاتی تبدیلی کے اثرات کے باعث رواں سال پاکستان میں تباہ کن سیلاب سے 33 ملین افراد متاثر ہوئے ہیں۔موسمیاتی تبدیلی کے باعث کرہ ارض اور انسانوں کو سب سے بڑا خطرہ لاحق ہے اور پاکستان میں حالیہ بارشیں اور سیلاب موسمیاتی تبدیلی کی تباہ کاریوں کا تازہ مثال ہے۔  شازیہ مری نے کہا کہ چند برس پہلے، سوشلسٹ انٹرنیشنل کے ممبران سمیت دنیا بھر میں بہت سے لوگ موسمیاتی تبدیلی کے مسئلے پر بحث کر رہے تھے جبکہ دنیا بھر میں اس مسئلے پربحث جاری ہی تھی کہ موسمیاتی تبدیلی سے متعلقہ آفات ہمارے اردگرد تباہی پھیلاتی رہیں۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھاکہ موسمیاتی تبدیلی ایک حقیقت بن چکی ہے اور عالمی برادری اس پر سنجیدگی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ امید کرتے ہیں کہ موسمیاتی تبدیلی کے تناظر میں عالمی برادری کی جانب سے سنجیدگی سیکچھ حقیقی اقدامات اٹھائے جائے گیں تاکہ مستقبل میں اس کے تباہ کاریوں سے بچا جاسکے۔ وفاقی وزیر شازیہ مری کا مزید کہنا تھا کہ موسمیاتی تبدیلی صرف ماحولیاتی مسئلہ نہیں ہے۔موسمیاتی تبدیلی صحت، زراعت معاش، امن و سلامتی اور دنیا کی مجموعی معیشت کے لییبہت بڑا خطرہ ہے اور اس  موسمیاتی تبدیلی کیباعث دنیا کے ترقی پذیر ممالک سب سے زیادہ متاثر ہورہے ہیں۔ سچ یہ ہے کہ ہمارے سیارے زمین کے تمام پہلوں کا مستقبل موسمیاتی تبدیلی کے مسئلے پر منحصر ہے۔