دہ حق آواز ضلع صوابی کے زیر اہتمام استحکام پاکستان اور پاک فوج کے حق میں ریلی 

دہ حق آواز ضلع صوابی کے زیر اہتمام استحکام پاکستان اور پاک فوج کے حق میں ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


صوابی (بیورو رپورٹ) دہ حق آواز ضلع صوابی کے زیر اہتمام  استحکام پاکستان اورپاک فوج کیحق میں ایک  ریلی نکالی گئی مارچ کی قیادت دہ حق آواز کے صدر احسان الحق بام خیلوی نے کی جبکہ دہ حق آواز کی دعوت پر آل یوسفزئی قبیلہ آرگنائزیشن کے بانی و روح رواں علی رحمان اور انکے دیگر ساتھی قائدین افسر خان۔ نوررحمان۔ سردار حسین۔فرمان اللہ۔ زیراب اور چئیرمین حاجی ممریز خان نے شرکت کی۔۔۔۔۔ دہ حق آواز کے کابینہ ارکان روشن خان۔رحمت اللہ۔ فضل رحیم یوسفزئی۔فدا محمد۔شمس کڈی وال۔ عمر صوابی وال۔ سمیع اللہ۔ سیف اللہ۔ قریش خان۔ ملک واجد۔ بلال سکندر۔ سہیل شاہ۔ عمران جانی۔ کامران خان۔ خان لالا۔طارق جان۔ سہیل خان۔حماد یوسفزئی نے شرکت کی۔ شرکاء نے کالا پل جہانگیرہ روڈ سے امن چوک ایک کلومیٹر پیدل مارچ کیا اور راستے بھر پر جوش نعرہ بازی کرتے رہے۔ صوابی امن چوک میں دہ حق آواز کے صدر احسان الحق بام خیلوی اور دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ کئی سال سے غیر ملکی ملک دشمن ایجنسیاں پاک فوج کو کمزور کرنے کے لئے گھناؤنی مہم چلا رہی ہے جو کہ قابل گرفت اور قابل مذمت ہے لیکن بدقسمتی سے اب ملک کے اندر بھی ان سیاست کے میدان سے سہولت کار مل گئے ہیں اور وہ اپنی بدترین ناکامیوں کا ملبہ قوم کی محسن فوج پر ڈالنے کی ناکام کوشش کر رہی جس سے ملک و قوم کی سلامتی کی ضامن اس ادارے کی مورال پر برا اثر پڑ رہا ہے۔ انہوں نے مذید کہا کہ عالم اسلام کے ممالک عراق۔ لیبیا۔ اور شام کی معیشت قابل رشک تھی۔ لوگ خوشحال تھے پیسے کی فراوانی تھی امن تھا اور سکون بھی۔ قانون کی حکمرانی تھی۔ الغرض سب کچھ تھا لیکن اگر کسی چیز کی کمی تھی تو وہ فوج تھی فوج نہیں تھی یا نہایت کمزور تھی تو ان کے ساتھ کیا ہوا وہ تباہ ہو گئے اب ہمارا دشمن بھی اس راہ پر چل پڑا ہے وہ فوج کو کمزور کر کے ایٹمی صلاحیت کو ختم کرکے ملک ہی پہلے توڑنا اور پھر ختم کرنا چاہتے ہیں انہوں نے مذید کہا کہ لگتا ھے کہ فوج کے خلاف ملک اکثر سیاسی جماعتیں ایک پیج پر ہیں لیکن کچھ بھی دہ حق آواز کے جانثار کارکن جان ہتھیلی پر رکھ فوج کے خلاف سوشل میڈیا پر چلنے
 والی مہم اور سیاستدانوں کی مجرمانہ خاموشی پر خاموش نہیں بیٹھے گی۔ شرکاء نے امن چوک کے بعد ڈی سی آفس صوابی کے باہر بھی احتجاج کیا جہاں احسان الحق بام خیلوی۔ روشن خان۔ سہیل شاہ اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے سیاسی اور فوجی قیادت سے مطالبہ کیا کہ فوج کے ادارے کے خلاف مہم چلانے والوں کا سخت محاسبہ کیا جائے