آپ ایک مثالی خاوند کیلئے کشش کا باعث کیسے بن سکتی ہیں؟ اپنے تحت الشعو رپر وہ خوبیاں نقش کرنے کی ابتدا ء کر یں جو آپ ایک مرد میں دیکھنا چاہتی ہیں 

 آپ ایک مثالی خاوند کیلئے کشش کا باعث کیسے بن سکتی ہیں؟ اپنے تحت الشعو رپر وہ ...
 آپ ایک مثالی خاوند کیلئے کشش کا باعث کیسے بن سکتی ہیں؟ اپنے تحت الشعو رپر وہ خوبیاں نقش کرنے کی ابتدا ء کر یں جو آپ ایک مرد میں دیکھنا چاہتی ہیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مصنف: ڈاکٹر جوزف مرفی
مترجم: ریاض محمود انجم
قسط:114
آپ ایک مثالی خاوند کیلئے کشش کا باعث کیسے بن سکتی ہیں؟
اب آپ اپنے تحت الشعوری ذہن کے کام کرنے کے طریقے سے واقف اور آگاہ ہو چکی ہیں۔ آپ کو یہ بھی معلوم ہے کہ جو کچھ بھی اپنے تحت الشعو رپر نقش اورمثبت کریں گے، اس کا عکس عملی طور پر آپ کی زندگی میں ظاہر ہو جائے گا اب آپ اپنے تحت الشعو رپر وہ خوبیاں اور خصوصیات نقش کرنے کی ابتدا ء کر دیں جو آپ ایک مرد میں دیکھنا چاہتی ہیں۔
اس ضمن میں ایک بہترین ترکیب ملاحظہ فرمایئے۔ رات کے وقت ایک آرام دہ کرسی پہ بیٹھ جائیں، آنکھیں بند کر لیں، بدن کو ڈھیلا چھوڑ دیں، ذہن میں تخیلاتی پروازکو بھی روک دیں، خاموش او رپرسکون ہو کر بیٹھ جائیں تاکہ کسی بھی بیرونی خیال اور تصورکو آپ کے ذہن میں داخل ہونے میں مشکل پیش نہ آئے۔ اپنے تحت الشعور کو مخاطب کریں اور اسے کہیں: ”میں اس وقت ایک ایسے شخص کیلئے کشش کا باعث ہوں جو ایماندار، مخلص، وفادار، قابل بھروسہ، مطمئن، خوش اور خوشحال ہے۔ میری یہ مطلوبہ او رپسندیدہ خوبیاں، اب میرے تحت الشعوری ذہن میں جذب ہوتی جارہی ہیں۔ جب میں ان خصوصیات کے اظہار پر ثابت قدم اور مستقل مزاج رہنا چاہتی ہوں، تو یہ خصوصیات اور خصوصیات میری ذات کا ایک حصہ بن جاتی ہیں اور میرے تحت الشعور کا احاطہ کر لیتی ہیں۔
مجھے معلوم ہے کہ ایک ”قانون کشش“ موجود ہے اورمیں اپنے تحت الشعوری ذہن کے اعتماد اور اعتقاد کے مطابق ایک مرد کے لیے باعث کشش بن سکتی ہوں۔ میں اس مرد کیلئے باعث کشش بن سکتی ہوں جو میرے تحت الشعوری ذہن کے مطابق بالکل مناسب اور صحیح ہے۔
مجھے یہ بھی معلوم ہے کہ میں اس مرد کو سکون اور خوشی مہیا کر سکتی ہوں۔ وہ مرد میری پسندیدہ اشیاء اور شخصیات کو پسند کرتا ہے اور میں بھی اس کی پسند کو بہت چاہتی ہوں۔ وہ نہ تو مھے بہلانا، پھسلانا اور مجھ پر ڈورے ڈالنا چاہتا ہے اور نہ ہی میں اسے بیوقوف بنانا چاہتی ہوں، ہم دونوں کے درمیان، ایک باہمی محبت، انفرادیت اور عزت و احترام موجود ہے۔“
اپنی اس دعا اور خواہش کو اپنے تحت الشعور میں نقش کرنے کی کوشش اور مشق کیجیے۔ پھر آپ ایک ایسے مرد کیلئے باعث کشش ہونے کی خوشی و مسرت میں مبتلاہو جائیں گی جس میں وہ عام خوبیاں اور خصوصیات موجود ہیں جو آپ کے ذہنی تصور اور تخیل کی پیداوار ہیں۔ پھر آپ کے تحت الشعور کی تخلیق صلاحیت آپ کیلئے ایک راستہ اور راہگزر آپ کیلئے وا کر دے گی اور پھر یہاں آپ دونوں، آپ اپنے تحت الشعوری ذہن کی ناقابل تغیر اور ناقابل مزاحمت روانی کے ذریعے، آپس میں ملاقات کریں گے۔ اپنی ذات میں موجود،محبت، خلوص اور تعاون سے دوسروں کو فیض یاب کرنے کی پُراشتیاق خواہش پیدا کیجیے۔ آپ نے محبت کا جو تحفہ، اپنے تحت الشعورکو ادا کیا ہے، اس تحفے کو خود بھی وصول کرنے کیلئے تیار رہیے۔(جاری ہے) 
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے۔ ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں)

مزید :

ادب وثقافت -