حکومت صرف وزیرستان کے عسکریت پسندوں سے مذاکرات کریگی،ذرائع

حکومت صرف وزیرستان کے عسکریت پسندوں سے مذاکرات کریگی،ذرائع

 اسلام آباد: (خصوصی رپورٹ) دہشتگردی کے خاتمے کیلئے صرف جنوبی اور شمالی وزیرستان میں حکیم اللہ محسود اور حاجی گل بہادر سے ہی مذاکرات کئے جائینگے۔ مالا کنڈ میں مولوی فضل اللہ، مہمند ایجنسی میں عبدالولی، خیبر ایجنسی میں منگل باغ اور باجوڑ میں قاری ضیاءالرحمان سے بات چیت نہیں ہوگی۔ مولوی فضل اللہ، عبدالولی اور قاری ضیاء الرحمان کے حوالے سے حکومتی موقف ہے کہ ان کے گروپ افغانستان میں موجود ہیں اور وہاں سے پاکستانی علاقوں میں حملے کرتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق جن علاقوں میں فوجی آپریشن مکمل ہونے کے بعد حالات معمول پر ہیں وہاں بھی مذاکرات نہیں کئے جائینگے۔

مزید : صفحہ اول