مصر جزیرہ میں دھماکے اور فائرنگ ، 33ہلاک ، 29زخمی

مصر جزیرہ میں دھماکے اور فائرنگ ، 33ہلاک ، 29زخمی

  

      قاہرہ(ثناءنیوز)مصری فوج نے جزیرہ نما سینا میں دہشت گرد حملوں میں تیس فوجیوں کی ہلاکت کے بعد علاقے میں ہنگامی حالت نافذ کر دی اورساتھ ہی تنظیم انصار بیت المقدس کے مشتبہ ٹھکانوں پربمباری بھی شروع کر دی ۔عرب ٹی وی کے مطابق دو روز قبل الشیخ زوید اوررفح شہروں میں انصار بیت المقدس کے ٹھکانوں پرحملے کیے گئے۔عینی شاہدین نے بتایا کہ مصری فوج کے اپاچی ہیلی کاپٹروں نے جزیرہ نما سینا میں دہشت گردوں کے کئی ٹھکانے تباہ کردیے ہیں۔خیال ہے کہ جزیزہ نما سینا کے علاقے الشیخ زوید میں کرم القوادیس کے مقام پر دس منٹ کے وقفے سے دو کار بم دھماکوں اور فائرنگ کے واقعات میں کم سےکم 33 مصری فوجی ہلاک اور 29 زخمی ہو گئے تھے۔مصری حکومت نے فوجیوں پر حملوں کو دہشت گردانہ کارروائی قرار دیتے ہوئے جزیرہ سینا میں چھپے مسلح افراد کے خلاف سخت کارروائی کی ٹھانی ہے۔جزیرہ نماسینا کا علاقہ پچھلے دو سال سے پرتشددکارروائیوں کا مرکزچلا آ رہا ہے۔مصر میں اخوان المسلمون کے حمایت یافتہ صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی فوج کے ہاتھوں برطرفی کے بعد جزیرے میں پرتشدد کارروائیوں میں غیرمعمولی اضافہ ہوا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -