مشرقی یروشلم میں تازہ جھڑپیں،5 فلسطینی گرفتار

مشرقی یروشلم میں تازہ جھڑپیں،5 فلسطینی گرفتار

  

 یروشلم(ثناءنیوز)مشرقی یروشلم میں تازہ جھڑپوں کے دوران کم از کم 5 فلسطینیوں کوحراست میں لے لیا گیا جہاں بڑھتی ہوئی بدامنی سے نمٹنے کیلئے سینکڑوں کی تعداد میں اضافی پولیس کی نفری تعینات کی جا چکی ہے۔جھڑپوں میں خاص طور پرلڑائی کے مرکزی ہمسایہ علاقے سلوان میں شدت دیکھی گئی،یہ علاقہ فلسطینی ڈرائیور عبدالرحمان شالودی،جس نے یروشلم میں ایک ہجوم پر کار چڑھا دی تھی، جس میں ایک اسرائیلی بچہ ہلاک ہو گیا تھا، کے آبائی گھر کے نزدیک اولڈ سٹی میں واقع ہے۔

ترجمان مکی روزنفلڈ کے مطابق پولیس نے رات گئے سلوان میں پتھرا کرنے والے احتجاجی مظاہرین کے گروہوں کو منتشر کر دیا۔روزنفلڈ کا کہنا تھا کہ کسی بھی واقعہ کی روک تھام اور اس سے نمٹنے کیلئے کم از کم 400 سے 500 اضافی پولیس دستے تعینات کئے جا چکے ہیں۔ گزشتہ رات شالودی کی تدفین سے قبل کشیدگی میں اضافہ دیکھا گیا،جوکہ رات 11 بجے کے قریب یروشلم کی اولڈ سٹی والز کے قریب ہو رہی ہے۔شالودی نے ایک تین سالہ بچی کو ہلاک اورچھ دیگرافراد کو زخمی کیا جب اس نے اسرائیلیوں کے ایک ہجوم پر تیزرفتار گاڑی چڑھا دی اور بعد ازاں پیدل فرار ہوتے ہوئے پولیس کی جانب سے اسے گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ واقعہ کے بعد سے کشیدگی میں اضافہ دیکھا گیا ہے، اسرائیل سے ملحقہ مشرقی یروشلم میں رات گئے جھڑپیں جاری رہیں اور فوج کی جانب سے جمعہ کے روز مغربی کنارے میں ایک احتجاجی نوجوان کو گولی مار کر ہلاک کرنے کے بعد ان میں مزید شدت آ گئی۔

مزید :

عالمی منظر -