حکومت قرضوں پر انحصار کم کرے‘ مزمل صابری

حکومت قرضوں پر انحصار کم کرے‘ مزمل صابری

  

اسلام آباد (نیٹ نیوز ) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر مزمل حسین صابری نے بڑھتے ہوئے ملکی قرضوں پر تشویش کا اظہار کیا جو جولائی 2014 تک بڑھ کر 15کھرب روپے سے تجاوز کر گئے ہیں اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ قرضوں کا بوجھ کم کرنے کے لئے فوری طور پر ضروری اقدامات اٹھائے کیونکہ قرضوں کی دلدل میں پھنسنے سے معیشت کی ترقی متاثر ہو رہی ہے جبکہ بے روزگاری اورغربت میں اضافہ ہو رہا ہے ۔انہوںنے کہا کہ موجودہ حکومت نے تقریبا ایک سال سے کچھ زائد عرصے میں 12 ارب ڈالر سے زائد قرضہ لیا ہے جو کوئی اچھی روش نہیں ہے کیونکہ اس سے عوام پر مہنگائی کا بوجھ بڑھ رہا ہے اور معاشی ترقی کی رفتار سست ہو رہی ہے۔ انہوںنے کہا کہ ملک میں گزشتہ پانچ ، چھ سالوں میں قرضوں میں 81 فی صد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے جو ناقص حکومتوں پالیسیوں کا عکاس ہے۔ مزمل صابری نے کہا کہ بڑھتے ہوئے قرضوںکی وجہ سے ملک کا مالی خسارہ سنگین ہوتا جا رہا ہے ۔

کیونکہ بجٹ کا سب سے زیادہ حصہ قرضوں کی ادائیگی میں چلا جاتا ہے جبکہ ترقیاتی منصوبوں اور عوام کے فلاحی کاموںکیلئے حکومت کے پاس بہت کم رقم رہ جاتی ہے جس سے عوام کا معیار زندگی بہتر کرنا مشکل ہوتا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر قرضوں کا درست استعمال کیا جاتا تو ملک کی معیشت کی حالت آج کافی بہتر ہوتی کیونکہ قرضوں سے پیداواری شعبے کی صلاحیت کو بہتر کیا جا سکتا ہے، جدید انفراسٹریچکر کو ترقی دی جا سکتی ہے اور ترقیاتی منصوبوں کی رفتار تیز کی جا سکتی ہے لیکن بدقسمتی سے ہمارے ملک میں قرضوں کا دانشماندانہ استعمال نہیں کیا گیا جس وجہ سے معیشت اور عوام کی حالت بہتر ہونے کی بجائے مزید مشکلات کا شکار ہو رہی ہے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ قرضوں پر انحصار کم کرے اور بچت و سرمایہ کاری کو فروغ دینے کی طرف توجہ دے، ٹیکس کے دائرے کو بڑھائے اور ترسیلات زر کو ترقیاتی کاموں کی طرف ترغیب دینے کیلئے مطلوبہ اقدامات اٹھائے جس سے حکومت کے ریونیو میں بہتری آئے گی اور ملک قرضوں کی دلدل سے نکل کر پائیدار اقتصادی ترقی کے راستے پر گامزن ہو سکے گا۔

مزید :

کامرس -