وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے آئی ڈی پیز کو نظر انداز کیا ہے،اسفند یار ولی

وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے آئی ڈی پیز کو نظر انداز کیا ہے،اسفند یار ولی

  

پشاور(اے این این) عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی نے کہا ہے کہمتاثرین کے مسائل حل نہ ہوئے تو فوجی آپریشن کے نتائج1971سے مختلف نہیں ہونگے، اسلام آباد کے دھرنوں نے ملک کے ساتھ بے گھر افراد کو بھی نقصان پہنچایا،وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے آئی ڈی پیز کو نظر انداز کیا ہے،ہمیں غلطیوں سے سیکھ کر آگے بڑھنا ہو گا،تمام سیاسی جماعتیں مل کر کردار ادا کریں۔پشاور میں آئی ڈی پیز کے حوالے سے منعقدہ گرینڈ جرگے سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اسلام آباد میں اقتدار کی کرسی پر لڑائی شروع ہوئی،کرسی کی لڑائی میں آئی ڈی پیز کو حکومت کیا میڈیا بھی بھول گیا۔45 منٹ کے خبرنامے میں چالیس یا 45 سیکنڈ آئی ڈی پیز کے حصے میں آتے ہیں حقیقتاً مسئلہ ایسا گھمبیر ہے کہ اگر اس کو حل نہ کیاگیا تو میں بلا خوف کہہ سکتا ہوں کہ آپریشن کے نتائج وہی ہونگے جو 1971ءمیں ہوئے تھے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کو چاہیے کہ وہ بیٹھے اور غور کرے کہ جس وقت آئی ڈی پیز وزیرستان سے نکل رہے تھے کیا کیا غلطیاں اور کوتاہیاں ہوئیں۔جب آئی ڈی پیز جائیں تواس وقت وہ غلطیاں پھر نہ دہرائی جائیں۔ اس ملک اور حکومت پر افسوس ہوتا ہے کہ کتنے بڑے مسئلے کو نظر انداز کیاگیا۔نظر انداز وفاقی اور صوبائی حکومت دونوں نے کیا۔پرانے پاکستان کے آئی ڈی پیز اس دفعہ کے آئی ڈی پیز سے زیادہ ہیں لیکن جس طرح طریقے سے ہماری حکومت نے انہیں ڈیل کیا اور انہیں عزت کے ساتھ اپنے گھروں تک واپس پہنچایا وہ ایک ریکارڈ ہے۔موجودہ حکومت اس ریکارڈ کو سامنے رکھے کہ کس طریقے سے متاثرین کو ہینڈل کیاگیا تھا۔ انہوںنے کہاکہ جو علاقے فوج خود کہتی ہے کہ ہم نے کلیئر کردیئے ہیں تو ان میں متاثرین کی واپسی کا اعلان جلد ہوناچاہیے۔پارلیمنٹ میں اے این پی کے سینیٹرز اور ایم این ایز نے متاثرین کے لئے آواز اٹھائی ہے۔طلباءکی تعلیم کو نقصان پہنچا تواس کا ازالہ بھی ضروری ہے ہم چلاتے رہے ہیں کہ فاٹا میں ایک یونیورسٹی نہیں،ایک کانفرنس میں نے کہا کہ کروڑوں روپے کے کام کررہے ہو ایک سڑک باجوڑ سے لے کر جنڈولہ تک بنادو تواس علاقے کی تقدیر بدل جائے گی۔تجارت میں اضافہ ہوگا ،تعلقات بڑھیںگے۔انہوںنے کہاکہ میں ماضی کی غلطیوں کا رونا نہیں روتا میں نے کل کی بات کرنی ہے ،سکولوں کالجوں،یونیورسٹیوںمیں خصوصی سیٹیں آئی ڈی پیز کے لئے رکھی گئیں آج بھی سکولوں کالجوں میں آئی ڈی پیز کے لئے خصوصی سیٹیں رکھی جائیں۔یہ ایک عجیب تاثر ہے کہ جو بندہ ڈی آئی خان میں رہتا ہے کہ وہ آئی ڈی پیز نہیں ہے

اسفند یار ولی

مزید :

صفحہ اول -