جیب کترے جو مرضی کر لیں، احتساب ضرور ہوگا:وزیراعظم عمران خان

جیب کترے جو مرضی کر لیں، احتساب ضرور ہوگا:وزیراعظم عمران خان
جیب کترے جو مرضی کر لیں، احتساب ضرور ہوگا:وزیراعظم عمران خان

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے پی ڈی ایم کی قیادت کو ‘’جیب کترے” قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ جو مرضی کر لیں، ان کا احتساب ہوگا۔ یہ پاکستان کے لیے فیصلہ کن وقت ہے۔

لاہور میں انصاف ڈاکٹرز فورم سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ سارے ‘’جیب کترے” ایک ہی سٹیج پر اکٹھے ہو کر شور مچاتے ہیں۔ پہلی مرتبہ انہیں نظر آ رہا ہے کہ اب احتساب ہوگا۔ یہ ڈرے ہوئے ہیں کیونکہ پہلی مرتبہ ایسا وزیراعظم آیا ہے جو بلیک میل نہیں ہوگا۔انہوںنے کہا جس نظام میں سزا اور جزا نہیں ہوتی، وہ ناکام ہو جاتا ہے۔ مافیا کرپٹ سسٹم کو تبدیل نہیں ہونے دے رہا اور اس سے فائدہ اٹھا رہا ہے۔ بغیر کارکردگی سب کی پروموشن اور تنخواہ بڑھا دی جاتی ہے۔ جنہوں نے فیصلے کرنا تھے، انہیں کھانسی آتی تو بیرون ملک چلے جاتے تھے۔ اب ہمیں ان ساری چیزوں کو ٹھیک کرنا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں مدینہ کی ریاست سے سیکھنا چاہیے۔ مدینہ کی ریاست کا ماڈل دنیا کا سب سے عظیم ماڈل تھا۔ آج کل کے نوجوان بل گیٹس کی کتاب پڑھتے ہیں، ہمیں اپنی نبی ﷺکی زندگی کا مطالعہ کرنا چاہیے۔ لوگ مجھ سے پوچھتے ہیں کہاں گیا نیا پاکستان؟ سوئچ دبانے سے نیا پاکستان نہیں بنے گا، جدوجہد کر رہے ہیں۔

انہوں نے خیبرپختونخوا کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ وہاں کی عوام نے کبھی کسی کو دوسری بار اقتدار کا موقع نہیں دیا لیکن صحت عامہ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کی وجہ سے تحریک انصاف کو دوبارہ حکومت بنانے کا موقع ملا۔ان کا کہنا تھا لیڈی ریڈنگ اور خیبر ہسپتال میں ریفارمز کے لیے عدالتوں میں جانا پڑا۔ ہم جس کو نکالتے تھے وہ جا کر سٹے لے لیتا تھا۔ سسٹم ایسا تھا کہ لوگوں کو بری عادتیں پڑ چکی تھی۔ اصلاحات کا پراسس آہستہ آہستہ ہوتا ہے، آج خیبرپختونخوا کے ہسپتالوں میں تبدیلی آ گئی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا بتایا کہ میں نے یاسمین راشد کو کہا کہ پنجاب کے تمام لوگوں کو ہیلتھ کارڈ دینے ہیں تو یاسمین راشد پریشان ہوگئیں اور کہنے لگیں،کہ اتنا بڑا صوبہ ہے، اتنے پیسے کہاں سے آئیں گے؟ میں نے انھیں جواب دیا کہ غریبوں کی مدد کرنے سے اللہ تعالیٰ کی برکت شامل ہو جاتی ہے۔ پہلے مرحلے میں غریبوں اور بیواؤں کو ہیلتھ کارڈ دیئے جائیں۔ ایک سال میں پنجاب کے تمام لوگوں کو ہیلتھ کارڈ دے دیں گے۔

مزید :

قومی -