پی ٹی آئی کے ارکان مرضی سے مستعفی ہوئے تو سپیکر کا سامنا کیوں نہیں کرتے،چودھری سلیم

پی ٹی آئی کے ارکان مرضی سے مستعفی ہوئے تو سپیکر کا سامنا کیوں نہیں ...

  

لاہور (پ ر)مسلم لیگ (ن) کے ممتاز رہنما ءچودھری سلیم علی نے کہا ہے کہ اگرپی ٹی آئی کے ارکان اپنی مرضی سے مستعفی ہوئے توسپیکرکاسامنا کیوں نہیں کرتے ۔لگتا ہے پی ٹی آئی کے ارکان نے کپتان عمران خان کے دباﺅپر اسمبلی رکنیت سے استعفیٰ دیا ورنہ وہ اکٹھے پیش ہونے کی ضدنہ کرتے ارکان اسمبلی سے ان کے استعفوں کی تصدیق کرائے بغیر منظورنہیں کئے جاسکتے پی ٹی آئی نے پارلیمانی ،آئینی ضابطوں اورجمہوری قدروں کومذاق بنا دیا ہے ۔اپنے ایک بیان میں چودھری سلیم علی نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کے متعدد ارکان پارلیمنٹ اپنااپنااستعفیٰ سپیکر سردار ایاز صادق کو بھجوانے کے باوجود سرکاری مراعات اورگاڑیوں سے مستفیدہورہے ہیں۔اقتدار کی ہوس کے مارے عمران خان کی غیرسنجیدہ سیاست نے عوام کومایوس کیا انہوں نے کہا کہ وزیراعظم میاں نوازشریف کا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں جرآتمندانہ اورآبرومندانہ خطاب پاکستان کے قومی مفادات اورقومی حمیت کاآئینہ دار ہے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں قومی مفادات کی بھرپوراندازمیں ترجمانی اوروکالت کرنے پروزیراعظم میاں نوازشریف خراج تحسین کے مستحق ہیںوزیراعظم میاں نوازشریف جس خلوص ،محنت اورکمٹمنٹ کے ساتھ پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری کیلئے راستہ ہموارکررہے ہیں اسے تاریخ میں سنہری الفاظ میں لکھا جائے گاانہوں نے کہا کہ وزیراعظم میاں نوازشریف کاہاتھ عوام کی نبض پر ہے ،وہ اس بار بھی اپنے ہم وطنوں کومایوس نہیں کریں گے۔وفاقی حکومت کی صحت ،تعلیم اورمعیشت سمیت مختلف شعبہ جات میں نمایاںکارکردگی کاکریڈٹ وزیراعظم میاں نوازشریف کوجاتا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -