وزیر اعلی کا بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالے طالبعلم کے قاتلوں کی گرفتاری کا حکم

وزیر اعلی کا بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالے طالبعلم کے قاتلوں کی گرفتاری کا ...

  


لاہور(کرائم سیل) راوی کنارے بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالے دوسری جماعت کے طالب علم کے قاتلوں کی فوری گرفتاری کے لئے وزیر اعلی نے احکامت جاری کر دیئے متاثرہ خاندان حبیب کی میت لے کر آبائی علاقے میلسی روانہ ہو گیا۔بتایا گیا ہے کہ لاری اڈاہ کے رہائشی عابد کا بیٹا جو کہ مقامی سکول سے چھٹی کے بعد گھر واپس جا رہا تھا اور اس کو نامعلوم افراد اٹھا کر لے گئے اور بد اخلاقی کے بعد اس کا گلا دبا دکر اس کو قتل کر دیا اور لاش راوی کنارے پھینک کر فرار ہو گئے اطلاع ملنے پر شاہدرہ پولیس نے لاش کو قبضہ میں لے لیا تاہم بچے کے سکول یونیفام سے سکول تک پہنچے جبکہ گھر نہ آنے پر خبیب کے والدین نے بچے کی تلاش شروع کر دی تاہم شاہدرہ پولیس نے بچے کے گھر جا کر والدعابد سے رابطہ کیا اور اس کو شناخت کے لئے تھانے لے گئے عابد نے اپنے بیٹے کی شناخت کر لی جس پر شاہدرہ پولیس نے عابد کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا تاہم وزیر اعلی پنجاب نے واقع کا نوٹس لے لیا ہے اور ملزمان کی فوری گرفتاری کے لئے پولیس کو تمام وسائل بروئے کار لانے کی ہدائت کردی ہے اور ایم پی اے غزالی سلیم بٹ اور ڈی سی او لاہورکو بچے کے گھر بھیجا جہاں انہوں نے ورثاسے اظہار افسوس کیا اور وزیر اعلی پنجاب کی جانب سے متاثرہ خاندان کو پانچ لاکھ روپے کا چیک دیا اور ان کو یقین دلایا کہ ایسا گھناؤنا کام کرنے والے ملزمان کو معاف نہیں کیا جائے گا اور ان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا ۔

مزید :

علاقائی -