تحرک انصاف کے 4کارکنوں کی ہلاکت ،نواز ،شہباز سمیت 11اہم شخصیات کیخلاف عدالتی حکم پر قتل کا مقدمہ درج

تحرک انصاف کے 4کارکنوں کی ہلاکت ،نواز ،شہباز سمیت 11اہم شخصیات کیخلاف عدالتی ...

  



                                      اسلام آباد (آن لائن) ایڈیشنل سیشن جج شاہ رخ ارجمند کے حکم پر تھانہ سیکرٹریٹ پولیس نے وزیراعظم محمد نواز شریف ‘ شہباز شریف اور متعدد وفاقی وزراءسمیت گیارہ افراد کے خلاف قتل ‘ دہشت گرد ی اور دیگر سنگین دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے یہ مقدمہ پاکستان تحریک انصاف کی درخواست پر درج کیا گیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ وزیراعظم اور دیگر ملزمان 30 اور 31 اگست کی درمیانی شب ریڈ زون میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں چار افراد کی ہلاکت کے ذمہ دار ہیں۔ پولیس نے انسداد دہشت گردی ایکٹ کی درفعہ سات سمیت ضابطہ فوجداری کی دفعات 302 ‘ 324 ‘ 148 اور 149 کے تحت مقدمہ درج کیا ہے۔شاہ محمود قریشی نے اپنی درخواست میں وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ پنجاب کے ساتھ وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان، وزیر دفاع خواجہ محمد آصف، ریلوے کے وزیر خواجہ سعد رفیق، اس وقت کے قائم مقام آئی جی پولیس اسلام آباد خالد خٹک، آئی جی پنجاب مشتاق سیکھرا، آئی جی ریلوے پولیس، ایس ایس پی آپریشن اور ڈپٹی کمشنر کو ملزمان نامزد کیا ہے۔ عدالت میں دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ تحریک انصاف کے کارکنون پر گولیاں برسائی گئیں جس سے چار کارکن جاں بحق ہوگئے۔ اس حوالے سے تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ درج کرنے کی درخواست دی گئی مگر شنوائی نہیں ہوئی۔ سرکاری وکیل سردار اسحاق نے موقف اختیار کیا کہ ریڈزون میں بیٹھے مشتعل کارکنون نے کار سرکار میں مداخلت کی اور حملہ کرکے ایس ایس پی آپریشن کو زخمی کردیا۔ شاہراہ دستور پر ججوں کے سپریم کورٹ جانے کا راستہ بھی بند کیا گیا جبکہ کارکنون کی ہلاکت پر پاکستان عوامی تحریک کی درخواست پر مقدمہ درج کیا جاچکا ہے۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔

مزید : صفحہ اول