وہ بھارتی گاؤں جہاں رہنے والے مردوں کو کوئی بھی اپنی بیٹی کا رشتہ دینے کو تیار نہیں، وجہ ایسی کہ آپ تصور بھی نہیں کرسکتے

وہ بھارتی گاؤں جہاں رہنے والے مردوں کو کوئی بھی اپنی بیٹی کا رشتہ دینے کو ...
 وہ بھارتی گاؤں جہاں رہنے والے مردوں کو کوئی بھی اپنی بیٹی کا رشتہ دینے کو تیار نہیں، وجہ ایسی کہ آپ تصور بھی نہیں کرسکتے

  



نئی دلی (نیوز ڈیسک) بجلی تو ہمارے ہاں بھی نایاب ہے لیکن ہم خوش قسمت ہیں کہ بجلی نہ ہونے کی وجہ سے ہمیں وہ دکھ نہیں دیکھنے پڑتے جو ایک بھارتی گاؤں کے مردوں کو دیکھنے پڑرہے ہیں۔

اخبار ’ہندوستان ٹائمز‘ کی رپورٹ کے مطابق کانپور شہر کے نواح میں واقع پشچم پاڑہ گاؤں بجلی کی سہولت سے محروم ہے، جس کا نتیجہ یہ نکلا ہے کہ کوئی بھی اپنی لڑکی کو اس گاؤں میں بیاہنے کو تیار نہیں۔ یہاں جولڑکیاں موجود ہیں ان سے شادیاں مذہبی اور سماجی وجوہات کی بناء پر نہیں ہوسکتیں، اور یوں اس گاؤں کے درجنوں مرد دلہن بیاہ کرلانے کا خواب دل میں سمائے اپنے نصیبوں کو اور اپنے حکمرانوں کو کوستے کوستے سوتے ہیں اور جاگتے ہیں تو پھر وہی دل کی ویرانی اور سونا پن ان کا سکون اجاڑنے لگتا ہے۔

1990ء کی دہائی میں ملائم سنگھ یادیو کے دور حکومت میں گاؤں والوں سے وعدہ کیا گیا تھا کہ انہیں بجلی فراہم کی جائے گی مگر گزشتہ دو دہائیوں میں گاؤں کا نام تو تین دفعہ بدلا گیا ہے مگر اسے بجلی نہیں دی گئی۔ واضح رہے کہ یہ گاؤں ان ہزاروں دیہاتوں میں سے ایک ہے جو بجلی کے منتظر ہیں، اور دیگر دیہاتوں میں بجلی نہ ہونے سے کیا مسئلے پیش آرہے ہیں، تاحال بھارتی میڈیا نے اس پر توجہ نہیں دی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...