بین الاقوامی برادری مسئلہ کشمیر کے حل میں مدد کرے، حریت رہنما سید علی گیلانی

بین الاقوامی برادری مسئلہ کشمیر کے حل میں مدد کرے، حریت رہنما سید علی گیلانی

  



سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ مزید بغیر کسی تاخیر کے کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے آگے آئیں۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق سید علی گیلانی ، جن کو بھارت سرکار نے نیو یارک میں اسلامی تعاون تنظیم کے اجلاس میں شرکت کرنے سے روک دیا ،نے سرینگر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دلی سرکار کشمیریوں کی جاری تحریک آزادی کو فوجی طاقت کے زریعے دبا نہیں سکتی۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ 68 سال میں بھارت نے فوجی طاقت کے بل پر مقبوضہ کشمیر کو قید خانے میں تبدیل کر دیا ہے۔انہوں نے سرینگر ،سوپور،اسلام ا آباد ،کپوارہ اور دوسرے علاقوں میں عید کے اجتماعات پر پولیس تشدد ،جس میں دو صحافیوں سیمت ایک درجن سے زائد شہری زخمی ہوئے کی سخت مذمت کی۔حریت رہنماؤں شبیراحمد شاہ اور نعیم احمد خان نے آج سرینگر میں میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے عید الاضحی کے موقع پر حریت رہنماؤں اور کارکنوں کی نقل و حرکت پر پابندی کی شدید مذمت کی۔انہوں نے عالمی برادری اور عالمی انسانی حقوق کے تنظیموں پر زور دیا ہے۔کہ وہ مسئلہ کشمیر کے فوری حل کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔انہوں نے بھارتی اور مقبوضہ علاقے کی جیلوں میں غیر قانونی طور پر قید تمام حریت رہنما ؤں اور کارکنوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔دریں اثنا حریت رہنماؤں سید علی گیلانی ،میرواعظ عمر فاروق ، شبیر احمد شاہ ،محمد یاسین ملک،محمد اشرف صحرائی ، نعیم احمد خان ، ظفر اکبر بٹ اور شوکت احمد بخشی مسلسل اپنے گھر میں نظر بند ہیں جبکہ محمد یوسف میر ،عبدالاحد پرہ، حکیم عبدلالرشید ، مولوی بشیر احمد ،محمد رمضان خان ،قاضی یاسیر احمد،انجینئر ہلال احمد وار،مختار احمد وازہ ، جاوید احمد میر و دیگر حریت رہنما اور کارکن مقبوضہ علاقے کے مختلف تھانوں میں قید ہیں۔اس کارروائی کا مقصد ان رہنماؤں کوعید اور جمعہ کے اجتماعات سے خطاب کرنے سے روکنا تھا۔دریں اثناء مقبوضہ کشمیر میں دوسرے روز بھی انٹرنیٹ سروس معطل رہی۔

مزید : عالمی منظر


loading...