اقوام متحدہ،پاک بھارت قیادت کے ہاتھ ملانے پرسفارتی حلقوں کی نظریں مرکوز

اقوام متحدہ،پاک بھارت قیادت کے ہاتھ ملانے پرسفارتی حلقوں کی نظریں مرکوز

  



نیو یارک (آئی این پی)اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر وزیر اعظم نواز شریف اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے درمیان ملاقات نہ ہونے کے مصدقہ اطلاعات کے بعد ایک کانفرنس میں دونوں ممالک کے وزرائے اعظم کے درمیان صرف ہاتھ ملانے پر تمام سفارتی حلقوں کی نظریں مرکوز ہو گئی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ چند ماہ سے پاک بھارت مابین کشیدگی میں اضافے ‘ بھارت کی لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر سیز فائر کی خلاف و رزی اور قومی سلامتی کے مشیر وں کے مذاکرات منسوخ ہونے کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ دونوں ممالک کے وزرائے اعظم کا آمنا سامنا متوقع ہے۔ سفارتی حلقوں کے مطابق بھارت کی طرف سے ورکنگ باؤنڈری پردیوار لگانے کے اعلان کے بعد سفارتی حلقے یہ تبصرہ کرکر رہے ہیں کہ دیوار برلن کی طرح یہ دیوار بھی دونوں ممالک کے درمیان دوریاں پیدا کرے گی اور بھارت کو یہ دیوار تعمیر کرنے سے گریز کرنا چاہیے ۔ سفارتی حلقو ں کے مطابق اس دیوار کی تعمیر کے منصوبے نے دونو ں ممالک کو دیوار برلن کی طرح مزید ایک دوسرے سے دور کر دیا ہے۔ سفارتی حلقوں کے مطابق امریکہ اس با ت کی کوشش کر رہا ہے کہ امن مشن کی فوجوں کے حوالے سے منعقد ہونے والی کانفرنس میں دیگر عالمی رہنماؤں کے ہمراہ وزیر اعظم نوا زشریف اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی بھی شریک ہو رہے ہیں اور امریکہ کی یہ خواہش ہے کہ دونوں وزرائے اعظم کم از کم ہاتھ ضرور ملا لیں اور ہاتھ ملانے والی تصویر دونوں ممالک کو دوبارہ قریب لانے میں مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔ نیو یارک میں مقیم سینئر صحافی مسعود حیدر کا کہنا ہے کہ مجوزہ کانفرنس کے میزبان چونکہ وزیر اعظم نوا زشریف ہیں اور اس کانفرنس میں نریندر مودی پاکستانی وزیر اعظم سے ہاتھ ضرور ملائیں گے تاہم دونوں کے درمیان باضابطہ ملاقات کا کوئی امکان نہیں ہے نہ ہی کوئی سفارتی بریک تھرو متوقع ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...