سی اینڈ ڈبلیوں میں مافیا متحرک، دیہی روڈز پروگرام میں قومی خزانے کو نقصان سے بچانے والا ریسرچ افسر معطل

سی اینڈ ڈبلیوں میں مافیا متحرک، دیہی روڈز پروگرام میں قومی خزانے کو نقصان سے ...

  



لاہور(شہباز اکمل جندران//انوسٹی گیشن سیل) سی اینڈڈبلیو کا متحرک مافیا کو الٹی کنٹرول سسٹم کیخلاف میدان میں آگیا۔ وزیر اعلیٰ دیہی روڈز پروگرام میں سٹرکوں کے ٹیسٹ فیل کرنے اور ناقص سٹرکوں کی نشاندہی کرتے ہوئے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کے نقصان سے بچانے والے ریسرچ افسر کو معطل کردیا گیا۔عون محمد نے ڈیرہ غازی خان سرکل کی سٹرکوں کے ایک سو58ٹیسٹ فیل کئے تومبینہ طورپر ٹھیکیدار اور ایکسین طیش میں آگئے۔رشوت مانگنے کا الزام عائد کر تے ہوئے صوبائی سیکرٹری کو درخواست دی گئی تو سیکرٹری نے معاملے کی چھان بین کئے بغیر ہی انجنئیروں کے کہنے پر عون محمد کو معطل کردیا۔معلوم ہواہے کہ پنجاب حکومت نے سی اینڈڈبلیو ڈیپارٹمنٹ کو خادم پنجاب دیہی روڈز پروگرام کی شکل میں ایک اہم ذمے داری سونپ رکھی ہے۔ جس کے تحت 30ستمبر تک صوبے میں دیہاتوں تک آسان رسائی کے لیے2ہزار کلومیٹر طویل سٹرکوں کی مرمت و توسیع کی جانا تھی۔صوبائی حکومت نے اربوں روپے کے اس منصوبے میں شفافیت پید ا کرنے کی غرض سے تھرڈ پارٹی اور پرائیویٹ لیبارٹریوں سمیت کوالٹی کنٹرول کے مختلف چیک قائم کئے ۔ صورتحال کو مد نظر رکھتے ہوئے صوبائی سیکرٹری مواصلات وتعمیرات پنجاب میاں مشتاق احمد نے محکمے کی اپنی روڈ ریسرچ لیبارٹری کو ہر سٹرک کے ٹیسٹ کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے صوبے بھر میں کو الٹی کنٹرول کی ریجنل لیبارٹریاں ان کے ماتحت کردیں اور ٹھیکیداروں کی ادائیگی کو روڈریسرچ لیبارٹری کی کلیرنس رپورٹ سے مشروط کردیا۔صوبائی سیکرٹری کے اس اقدام پر انجنئیروں میں سراسیمگی پھیل گئی ۔ اور انہوں نے دبے لفظوں میں اس کی مخالفت بھی کی ۔کیونکہ روڈ ریسرچ لیبارٹری کے ڈائریکٹر رانا نثار احمد کی ایماندارانہ شہرت ان کے لیے خطرے کا باعث بن سکتی تھی۔لیکن صوبائی سیکرٹری میاں مشتاق احمد کو وزیر اعلیٰ کی اس پروگرام میں دلچسپی کا بخوبی اندازہ تھا۔اور انہوں نے انجنئیروں کے ’’خدشات‘‘ کو نظر انداز کردیا۔ذرائع کے مطابق روڈ ریسرچ لیبارٹری نے کام شروع کرتے ہی اپنی پہلی رپورٹ صوبائی سیکرٹری کو پیش کی تو انکشاف ہوا کہ محکمے کے منجھے ہوئے انجنئیروں کی تقریباً ہر سٹرک ٹیسٹ میں فیل ہوچکی ہے اور سب گریڈ ، گریڈ ، سب بیس اور بیس میں طے شدہ معیار اور مطلوبہ مٹیریل استعمال نہیں کیا گیا۔اس رپورٹ کی روشنی میں ٹھیکیداروں کو ادائیگیاں روکی گئیں تو ٹھیکیدار اور انجنئیر شور مچانے لگے۔اور انہوں نے مختلف علاقوں میں ریجنل لیبارٹریوں کے ریسرچ افسروں کو خریدنے کی کوششیں شروع کردیں۔اسی سلسلے میں ایک کوشش ڈی جی خان میں واقع کو الٹی کنٹرول کی ریجنل لیبارٹری میں کی گئی اورلیبارٹری کے جونئیر ریسر چ افسر عون محمد کو مبینہ طورپرخریدنے کی کوشش کی گئی۔لیکن عون محمد نے ایمانداری کو ترجیح دیتے ہوئے سرکل کی تمام سٹرکوں کے ٹیسٹ میرٹ پر کئے اور مختلف سٹرکوں کے ایک سو 58ٹیسٹ فیل اور ایک سو 34پاس کردیئے ۔بتایا گیا ہے کہ ایکسین مظفر گڑھ طارق ملگانی اور ایکسین ڈی جی خان منصور پنسوترا کی طرف سے عون محمد کو وقتاً فوقتاً مجبور کیاگیا کہ وہ ٹیسٹوں میں ان کی مرضی کے رزلٹ دیں۔لیکن عون محمد نے ٹیسٹ لیے تو ایک ہی سٹرک کہیں سے پاس تو کہیں سے فیل ہوگئی۔ اکثرسٹرکوں پر ڈالے جانے والے مٹیریل کی موٹائی کم تھی۔لک (بچومن ) جل چکی تھی۔اور میٹریل میں لک کی شرح چار اعشاریہ تین اور چار اعشاریہ چھ فیصد کی بجائے چار فیصد اور چار اعشاریہ ایک فیصد پائی گئی۔لیکن عون محمد کو مجبور کیا گیاکہ وہ چار اعشاریہ چھ کی رپورٹ کریں ۔لیکن عون محمد نے اس سے انکار کردیا کیونکہ ایسے کرنے سے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوتا اور ٹھیکیدار کو زائد ادائیگی کرنا پڑتی۔عون محمد کے انکار پر عون محمد کے خلاف سیکرٹری سی اینڈڈبلیو کو درخواست دیدی گئی کہ وہ ہر سٹر ک کے ٹیسٹوں کے عوض 25ہزار روپے رشوت طلب کرتا ہے۔اور صوبائی سیکرٹری مواصلات وتعمیرات پنجاب میاں مشتاق احمد نے روڈ ریسرچ لیبارٹری کے ڈائریکٹر رانا نثار احمد سے بات چیت اور معاملے کی چھان بین کے بغیر ہی عون محمد کو معطل کردیا ہے۔ذرائع سے یہ بھی معلوم ہواہے کہ فیل ہونے والی سٹرکوں کے ٹیسٹ رزلٹ دکھا کر انجنئیر ٹھیکیداروں کو بلیک میل کرتے ہیں۔اس سلسلے میں گفتگو کرتے ہوئے سپیشل سیکرٹری سی اینڈڈبلیو پنجاب خالد محمود کا کہناتھا کہ صوبائی سیکرٹری حج کے لیے گئے ہیں۔ لیکن وہ اس معاملے کی چھان بین ضرورکرینگے۔اور کسی بے گناہ سے زیادتی نہیں ہونے دینگے۔اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ایکسین ہائی ویز مظفر گڑھ طارق ملگانی کا کہناتھا کہ جے آر او عون محمد سے انہیں کسی قسم کی عداوت نہیں ہے بلکہ انہیں عون محمد کی معطلی پر افسوس ہے۔ان کا کہناتھا کہ سی اینڈڈبلیو میں جعلی شناخت کی درخواستیں اور شکایتیں معمول بن چکی ہیں۔ایکسین ہائی ویز ڈی جی خان منصور پنسوترا کا کہناتھا کہ انہوں نے عون محمد کے خلاف کسی قسم کی شکایت نہیں کی۔اور نہ ہی انہیں عون محمد سے کوئی پرخاش ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...