ناروے میں پہلے پاکستانی نژاد یوسف گیلانی ڈپٹی میئر منتخب، پاک ناروے تعلقات کی بہترین کے خواہاں

ناروے میں پہلے پاکستانی نژاد یوسف گیلانی ڈپٹی میئر منتخب، پاک ناروے تعلقات ...
ناروے میں پہلے پاکستانی نژاد یوسف گیلانی ڈپٹی میئر منتخب، پاک ناروے تعلقات کی بہترین کے خواہاں

  



پیرس (ویب ڈیسک) یورپی ملک ناروے میں پہلی دفعہ ایک پاکستانی ڈپٹی میئر بن گئے ہیں۔ ناروے کے شہر دریمن کے نومنتخب نائب میئر سید یوسف گیلانی کا بنیادی طور پر تعلق لاہور سے ہے۔ ان کے والد ڈاکٹر سید اظہر گیلانی چار، پانچ عشرے قبل پاکستان سے ناروے ہجرت کرگئے تھے البتہ 42 سالہ یوسف گیلانی وہ پہلے پاکستانی نژاد ہیں جو ناروے میں پیدا ہوئے۔ پاکستان کے بارے میں یوسف گیلانی نے کا کہ پاکستان میں بدعنوانی ایک بڑا مسئلہ ہے، اسے ختم ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ناروے اور پاکستان کے تعلقات بہتر بنانے کے لئے ایک پل کا کردار ادا کرنے کے لئے تیار ہیں۔ ان کے نئے عہدے کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ شمالی یورپ یعنی سکینڈے نیویا میں وہ پہلے مسلمان ہیں جو اس عہدے پر فائز ہوئے ہیں۔ وہ اس سے قبل کئی بار دریمن سٹی پارلیمنٹ کے رکن منتخب ہوتے رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ وہ نارویجن کرکٹ بورڈ کے جنرل سیکرٹری اور کرکٹ ٹیم کے منیجر بھی رہ چکے ہیں۔ اس وقت وہ نارویجن ویلفیئر اور ایڈمنسٹریٹو اتھارٹی (ناو) کے آکسر ضلع کے سربراہ ہیں۔ گیلانی اپنے آپ کو لوگوں کے سماجی مسائل میں مصروف رکھنا پسند کرتے ہیں۔ اسی لئے وہ کثیر الثقافتی شہر دریمن کے لوگوں میں مقبول ہوئے ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ وہ انسانی آزادی پر یقین رکھتے ہیں اور یہ انسان کی ترقی کے لئے بہت اہم ہے۔ جب لوگ کسی دوسرے کی ڈکٹیشن کے بجائے خود فیصلے کریں گے تو انہیں ترقی کے مواقع میسر ہوں گے۔ یوسف گیلانی کا تعلق ناروے کی لبرل پارٹی سے ہے اور وہ انتخابی حمایت پر دریمن کے لوگوں کے شکر گزار ہیں۔ ان کی کامیابی سب کے لئے ایک اعزاز ہے خاص طور پر اقلیتوں کے لئے باعث فخر ہے۔ وہ سکولوں کی بہتری، تعلیم کے فروغ، ماحول، کھیل، چھوٹے کاروبار اور صنعتوں کی بہتری اور بزرگ شہریوں کی فلاح و بہبود کے لئے کام کریں گے۔ پاکستان کے بارے میں یوسف گیلانی نے کہا کہ پاکستان میں بدعنوانی ایک بڑا مسئلہ ہے، اسے ختم ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ناروے اور پاکستان کے تعلقات بہتر بنانے کے لئے ایک پل کا کردار ادا کرنے کے لئے تیار ہیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...