منیٰ حادثے میں ایرانی سفیر کے لاپتہ ہونے کی اطلاعات، ایرانی سفیر اصلی نام سے مملکت میں داخل نہیں ہوئے: سعودی حکام

منیٰ حادثے میں ایرانی سفیر کے لاپتہ ہونے کی اطلاعات، ایرانی سفیر اصلی نام سے ...
منیٰ حادثے میں ایرانی سفیر کے لاپتہ ہونے کی اطلاعات، ایرانی سفیر اصلی نام سے مملکت میں داخل نہیں ہوئے: سعودی حکام

  



ریاض (اے این این) سعودی عرب کے حکام نے کہا ہے کہ لبنان میں ایران کے سابق سفیر اپنے اصلی نام سے سعودی عرب میں داخل نہیں ہوئے، 'غضنفر آبادی' کا نام اس سال حج کے لئے مملکت آنے والے افراد کی فہرست میں نہیں ملا، ممکن ہے سابق ایرانی سفیر کسی نامعلوم طریقے سے سعودی عرب میں داخل ہوئے ہوں۔

عرب میڈیا کے مطابق لبنان میں ایران کے سابق سفیر غضنفر رکن آبادی کی منیٰ میں ہونے والی بھگدڑ میں لاپتا ہونے سے متعلق متضاد خبریں آ رہی ہیں، ایک اطلاع کے مطابق وہ بھگدڑ میں زخمی ہوئے جبکہ دوسری خبر کے مطابق وہ منیٰ واقعہ کے بعد سے لاپتا ہیں۔ تہران میں سرکاری حکام اور سفیر کے اہل خانہ اس امر کی تصدیق کر رہے ہیں کہ غضنفر آبادی ایرانی حاجیوں کے دستے میں شامل تھے۔ لاپتا سفیر کے بھائی مرتضیٰ آبادی نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ ہم اپنے بھائی سے رابطے کی کوشش میں ہیں لیکن ہمارا ان سے رابطہ نہیں ہو سکا۔ حادثے کے بعد سے ہم ان کے ٹیلی فون نمبر پر مسلسل رابطہ کر رہے ہیں، لیکن کوئی جواب نہیں ملتا۔

اس کے برعکس ایران کی ایک اہم شخصیت امیر موسوی نے کہا کہ غضنفر رکن آبادی کے منی بھگدڑ میں زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ غضنفر آبادی کی تہران میں موجود اہلیہ اور مکہ مکرمہ میں موجود بھائی نے تصدیق کی ہے کہ سفیر محترم خیریت سے ہیں اور ان کی صحت کے بارے میں پریشانی کی بات نہیں۔ دوسری جانب سعودی عرب کے ذرائع نے کہا ہے کہ لبنان میں سابق ایرانی سفیر کا نام حاجیوں کی لسٹ میں نہیں ہے۔ ہو سکتاہے کہ وہ کسی اور طریقے سے سعودی عرب میں داخل ہوئے ہوں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...