چینی ماں باپ نے بیٹی کے سامنے اس کا پالتو کتا پکا کر کھا لیا، وجہ انتہائی عجیب و غریب

چینی ماں باپ نے بیٹی کے سامنے اس کا پالتو کتا پکا کر کھا لیا، وجہ انتہائی عجیب ...
چینی ماں باپ نے بیٹی کے سامنے اس کا پالتو کتا پکا کر کھا لیا، وجہ انتہائی عجیب و غریب

  



بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین کے کئی ایسے تہوار اور رسوم و رواج ہیں جو باقی دنیا کے لیے کسی حیرت کدے سے کم نہیں۔ انہیں میں سے ایک تہوار ایسا ہے جو سال کے طویل ترین دن پر منایا جاتا ہے۔ یہ تہوار چین کے جنوب مغربی علاقوں میں منایا جاتا ہے اور اس دن یہاں کے باشندے کتوں کے گوشت سے ضیافتیں اڑاتے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق ہر سال اس تہوار پر 10ہزار کتے کھائے جاتے ہیں۔ کتوں کے علاوہ اس دن بلیوں کی بھی شامت آتی ہے اور چینی خاصی تعداد میں بلیاں بھی کھا جاتے ہیں۔

کیا آپ ناپسندیدہ میسجز اور کالز وصول کرنے سے تھک گئے ہیں؟ تو یہ خبر آپ کے لئے ہے

چین میں بی بی سی کی نمائندہ جولیانا لو اپنی رپورٹ میں لکھتی ہیں کہ ”ہر سال یہ دن مجھے میرے بچپن کے چند تلخ ترین دنوں کی یاد تازہ کروا دیتا ہے۔ میں اپنے والدین کی اکلوتی اولاد تھی اس لیے لاڈلی تھی۔ میں نے بہت ضد کرکے اپنے والد سے ایک خوبصورت کتا لیا تھا۔ اس چھوٹے سے کتے کومیں نے ”ڈوگی“ کا نام دیا اور جلد ہم اس قدر گھل مل گئے کہ ہمیں الگ کرنا مشکل ہو گیاتھا۔ ابھی ایک سردیاں ہی وہ کتا میرے پاس رہا تھا کہ ایک دن میرے والدین نے مجھے کہا کہ اب اس کتے کو گھر سے نکالنے کا وقت آ گیا ہے۔“

عیدا لضحیٰ کے موقع پر کویت میں ڈاکٹر کو قصائی بننا مہنگا پڑ گیا،گرفتار ہو گیا

جولیانا لکھتی ہے کہ ”ایک روز میری والدہ شاپنگ کے بہانے مجھے اپنے ساتھ لے گئی۔ جب ہم کئی گھنٹوں بعد واپس آئے تو یہ لوگ میرے ”ڈوگی“کو ہلاک کرکے اس کا گوشت پکا بھی چکے تھے۔ کسی نے بھی میرے آنسوﺅں کی پرواہ نہیں کی۔ میرے ہمسائے کہہ رہے تھے کہ میں کچھ ہی دنوں میں یہ سب بھول جاﺅں گی لیکن آج 35سال بعد بھی میں اس صدمے کو بھلا نہیں پائی۔“جولیانا کا کہنا تھا کہ ”میں نے اس روز اپنے کتے کا گوشت کھانے سے انکار کر دیا تھا اور اس کے بعد ساری زندگی کتے کا گوشت نہیں کھایا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...