ججز اپنے اختیارات کا استعمال کریں تو بروقت انصاف فراہم کیا جاسکتا ہے،ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی

ججز اپنے اختیارات کا استعمال کریں تو بروقت انصاف فراہم کیا جاسکتا ہے،ڈی جی ...
ججز اپنے اختیارات کا استعمال کریں تو بروقت انصاف فراہم کیا جاسکتا ہے،ڈی جی جوڈیشل اکیڈمی

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی )ڈائریکٹر جنرل پنجاب جوڈیشل اکیڈمی جسٹس ریٹائرڈ شاہد سعید نے کہا ہے کہ عدالتی افسران کی اچھی تربیت بہتر عدالتی نظام کی بنیاد ہے۔ ججز کی استعداد کاربڑھا کر سائلین کو بروقت اور سستا انصاف فراہم کیا جا رہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ قانون کے اختیار کو استعمال کرنا جج کا کام ہے،ججز اپنے اختیارات کو استعمال کریں تو سائلین کوبروقت انصاف فراہم کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں ضلعی عدلیہ کے ججز کو نئے قوانین سے روشناس کرانے اور جدید دور کے تقاضوں کے مطابق تربیت کے خاطر خواہ انتظامات کئے جاتے ہیں۔ ججز کو سائبربینکنگ کرائم اور فرانزک سائنس سے متعلقہ عملی تربیت بھی فراہم کی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں اب تک 4081ضلعی عدلیہ کے ججز تربیت مکمل کرچکے ہیں۔ ججز کے باہمی رابطے کو مربوط بنانے کے لئے اقدامات کرنے کےساتھ ویڈیولنک کے ذریعے تربیت کا بھی انتظام کردیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جلد ہی گلگت بلتستان، آزاد کشمیر اور ملک بھر کی ضلعی عدلیہ کے نمائندہ ججز کو مدعو کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ججز کے درمیان باہمی رابطے کو فروغ دے کر ہی سوچ کی نئی راہیں کھلیں گی۔ان کا کہنا تھا کہ آبادی میں اضافے سے مقدمات کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے،دہشت گردی اور امن و امان کے مسائل کی بناءپر بھی مقدمات میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے جسکی وجہ سے زیر التوا مقدمات نمٹانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔انہوں نے بتایا کہ مقدمات جلد نمٹانے کے لئے نئے جوڈیشل منیجمنٹ سسٹم سے ججزکو آگاہ کیا جا رہا ہے اور ان کی تربیت بھی کی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بہت سے مسائل موجود ہونے کے باوجود عوام کی عدلیہ پر توقعات میں اضافہ ہو اہے۔سائلین کے اعتماد کو بحال رکھنے کے لئے عدالتی نظام میں پائی جانے والی خامیوں کو دور کر کے ججز کی بہترین عمومی تربیت بھی کی جا رہی ہے جبکہ وکلاءکے تعاون سے زیر التواءپرانے مقدمات کو بھی جلد نمٹایا جارہاہے۔انہوں نے کہاکہ وقت کے ساتھ ساتھ جوڈیشل اکیڈمی میں زیرتربیت ججزکی تعدادبڑھنے اورموجودہ بلڈنگ کی گنجائش میں کمی پر قابوپانے کے لئے کالا شاہ کاکوکے مقام پرنئی عمارت کی تعمیر تیزی سے جاری ہے۔انہوں نے امکان ظاہر کیا کہ اگلے برس دسمبر تک اکیڈمی نو تعمیر شدہ عمارت میں منتقل ہو جائے گی۔ایک سوال کے جواب میں ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی جسٹس ریٹائرڈ شاہد سعید کا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلوں پر عمل درآمد کرنے کے لئے ججز کو حاصل توہین عدالت کے اختیار کو استعمال میں لانے کی بھی خصوصی تربیت کی جاتی ہے۔توہین عدالت کے اپنے اختیار کو استعمال میں لانا جج کی اپنی صوابدید ہوتی ہے تاہم ججز کو یہ بتایا جاتا ہے کہ کن حالات میں توہین عدالت کے مرتکب شخص پراس سزاءکا اطلاق کیا جائے یا اسے جیل کے اندر بھجوا دیا جائے۔

مزید : لاہور