خام سٹیل پر ریگولیٹری ڈیوٹی واپس لی جائے ، پاپام کا وزیراعظم سے مطالبہ

خام سٹیل پر ریگولیٹری ڈیوٹی واپس لی جائے ، پاپام کا وزیراعظم سے مطالبہ

  

 اسلام آباد (این این آئی)پاکستان ایسوسی ایشن آف آٹو پارٹس اینڈ ایسسریز مینوفیکچررز (پاپام) نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے اپیل کی ہے کہ آٹو پارٹس انڈسٹری کیلئے استعمال ہونے والے اسٹیل کے خام مال پرعائدریگولیٹری ڈیوٹی واپس لی جائے۔پاپام کے چیئرمین مشہود علی خان نے کہا ہے کہ ایسا خام مال جو کہ ملک میں تیار نہیں ہوتا اس پر ریگولیٹری ڈیوٹی کے نفاذ سے انڈسٹری بحران کا شکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوری 2015ء میں ریگولیٹری ڈیوٹی 5 سے 15 فیصد عائد کی گئی اور کہا گیا کہ یہ عبوری عرصے کیلئے ہے مگر بعدازاں اگلے برس اسے ختم کرنے کی بجائے بڑھا کر 15 سے 35 فیصد کر دیا گیا اور اب اس عبوری فیصلے کو تیسرا برس ہے۔انہوں نے کہا کہ خام مال کی قیمت میں اضافے سے مقامی آٹو انڈسٹری مسابقت کے قابل نہیں رہی۔ 30 سے 35 فیصد کی شرح سے عائد ایڈیشنل ٹیرف سے کئی یونٹس نے پیداوار بند کر دی ہے۔ لاگت بڑھنے سے معیاری آٹو پارٹس کی تیاری ممکن نہیں رہی۔انہوں نے کہا کہ پالیسی میکرز کو جائزہ لینا چاہئے کہ وہ 300 فیصد ویلیو ایڈیشن کرنیوالی صنعت کو پروموٹ کرنا چاہتے ہیں یا پھر 50 فیصد سے بھی کم ویلیو ایڈیشن کرنے والی صنعت کو۔مشہود علی خان نے کہا کہ ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کرنے کا فیصلہ مقامی اسٹیل انڈسٹری کو تحفظ دینے کیلئے کیا گیا لیکن ایسے سامان کی پی سی ٹی کو بھی خام مال میں شامل کر لیا گیا ہے جو کہ مقامی طور پر تیار نہیں ہوتا۔اس لئے پاپام وزیراعظم سے اپیل کرتی ہے کہ وہ اس فیصلے پر نظرثانی کریں اور ڈیوٹی واپس لی جائے۔

مزید :

کامرس -