فیصل آبادچیمبرشہر کی مربوط ترقی کیلئے خصوصی کمیٹی قائم کرنی چاہیے

فیصل آبادچیمبرشہر کی مربوط ترقی کیلئے خصوصی کمیٹی قائم کرنی چاہیے

  

فیصل آباد (بیورورپورٹ) نیشنل گروپ کے راہنما میاں محمد ادریس نے کہا ہے کہ فیصل آباد چیمبرکو فیصل آباد کی جامع ، منظم اور مربوط ترقی کیلئے ایک خصوصی کمیٹی قائم کرنی چاہیئے جو اس شہر کیلئے نئے ایئرپورٹ سمیت دیگر میگا منصوبوں پر کام کر سکے۔ وہ فیصل آباد چیمبرکے سالانہ اجلاس عام سے خطاب کررہے تھے جس میں نئے منتخب ہونے والے عہدیداروں کا باضابطہ اور سرکاری طور پر اعلان بھی کیا گیا۔ انہوں نے اس سلسلہ میں سیالکوٹ کی بزنس کمیونٹی کی مثال دی اور کہا کہ اس کمیٹی کو کمرشل بنیادوں پر قائم کرکے اس کے شیئر فروخت کرکے سرمائے کا بندوبست کیا جا سکتا ہے۔ اس مقصد کیلئے انہیں صرف ایسے دوسے اڑھائی سو لوگوں کی ضرورت ہے جو خدمت کے جذبے سے اس کمیٹی کے شیئر خرید سکیں۔ انہوں نے کہا کہ بزنس کمیونٹی کے نیشنل گروپ نے فیصل آباد کی ٹریڈ پالیٹیکس میں جو کامیابیاں حاصل کی ہیں وہ ٹیم ورک کا نتیجہ ہیں اور اس سلسلہ میں فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سبکدوش ہونے والے عہدیدار اور ایگزیکٹو ممبران خاص طور پر مبارکباد کے مستحق ہیں۔ انہوں نے سالانہ اجلاس عام کو عہدیداروں کے محاسبہ کا دن قرار دیا اور کہا کہ ہمیں فخر ہے کہ ہم نے گزشتہ سال جن عہدیداروں کا انتخاب کیا تھا انہوں نے ہماری توقعات کے عین مطابق کام کیا اور یہ ان کی انتھک محنت اور کوششوں کا نتیجہ ہے کہ اس سال کارپوریٹ کلاس کے تمام ممبران بلا مقابلہ منتخب ہوئے۔

جبکہ ایسوسی ایٹ کلاس کے انتخابات میں بھی نیشنل گروپ کے نامزد امیدواروں نے تاریخی کامیابیاں حاصل کیں۔ انہوں نے کہا کہ اس دفعہ ہونے والے انتخابات میں ووٹروں کا ریکارڈ ٹرن آؤٹ رہا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ نہ صرف لوگ چیمبر کے انتخابات میں دلچسپی لیتے ہیں بلکہ اس سلسلہ میں ہماری انتخابی ٹیم نے بھی بھرپور کوششیں کیں۔ انہوں نے موجودہ عہدیداروں کی طرف سے ٹیکس استثنیٰ سرٹیفیکیٹ کے حصول اور آراینڈ ڈی سیل کے قیام کو خاص طور پر سراہا۔ انہوں نے کہا کہ نئے عہدیداروں کو بھی واضح روڈ میپ کے ساتھ کام کرنا ہوگا تا کہ آئندہ سال جب سالانہ اجلاس عام ہو تو اسی طرح ہمارا سر فخر سے بلند ہو۔ انہوں نے کہا کہ نئے عہدیداروں کو پہلے 2 ہفتوں میں ہی اپنے لئے اہداف کا تعین کرکے ان پر کام شروع کر دینا چاہیئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ چیمبر کو ماں کا عملی کردار کرنے کیلئے تمام ایسوسی ایشنوں سے اپنے رابطوں کو مضبوط بنانا ہوگا۔ اس سلسلہ میں ہر روز ایک ایسوسی ایشن کے عہدیداروں سے ملاقات کرکے ان کے مسائل کو حل کرنے کیلئے عملی اقدامات بھی اٹھانے ہونگے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بجٹ کی تیاری کیلئے چند ماہ کام کرنے کی بجائے اس کیلئے خصوصی سیل قائم کیا جانا چاہیئے جو پورا سال کام کرے اور ایسی قابل عمل بجٹ تجاویز تیار کی جائیں جن سے واقعی بزنس کمیونٹی کو فائدہ ہو اور ان کیلئے زیادہ سے زیادہ آسانیاں پیدا کی جاسکیں۔ انہوں نے ممبرشپ کو چیمبر کی اصل قوت قرار دیا اور کہا کہ اس میں اضافہ کیلئے بھی مربوط کوششوں کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قائمہ کمیٹیوں کو چیمبر کے دماغ کی حیثیت حاصل ہے۔ ان کے عہدوں کی بندر بانٹ نہیں ہونی چاہیئے یہ عہدے صرف اہل اور پیشہ وارانہ لوگوں کو ملنے چاہیءں۔ پہلے چھ ماہ کے دوران جو چیئرمین کارکردگی کا مظاہرہ نہ کر سکیں ان کو فارغ کرکے ان کی جگہ دوسرے اہل لوگوں کو موقع دیا جائے۔ انہوں نے سی ایس آرکمیٹی کے قیام پر بھی زور دیا جو شہر میں کسی بھی ناگہانی صورتحال میں متاثرہ لوگوں کی مدد کر سکے۔ انہوں نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ فیصل آباد سے بڑی تعداد میں قومی سطح کی ایسوسی ایشنیں رجسٹر کرائی جائیں تا کہ ان کے ذریعے نہ صرف فیڈریشن آ ف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں اس شہر کی نمائندگی کو بڑھایا جا سکے بلکہ اس کی آواز کو قومی سطح پر مزیدموثربھی بنا یا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ نئے عہدیداروں کو ایکسپو سنٹر کے قیام کیلئے بھی آواز بلند کرنا ہوگی۔ میاں جاوید اقبال نے کہا کہ نیشنل گروپ گزشتہ پندرہ سے بیس سالوں سے شہر کی تاجر برادری کو منظم کرنے میں مصروف ہے اور اس کی خدمات کی وجہ سے ہی اس کو تاجر برادری کی حمایت حاصل ہے۔

مزید :

کامرس -