نشتر ہسپتال میں صحت پروگرام کے حوالے سے تشہیری مواد کی بھرمار

نشتر ہسپتال میں صحت پروگرام کے حوالے سے تشہیری مواد کی بھرمار

  

ملتان(وقائع نگار) نشتر ہسپتال میں تشہیری مواد کی بھرمار، عمارت پر جگہ جگہ بینرز و پوسٹرز آویزاں کر دیئے گئے جن پر وزیر اعلیٰ پنجاب کا صحت کے حوالے سے ویثرن درج ہے ہسپتال کے مختلف شعبوں ، من گیٹ ، ایمرجنسی گیٹ سمیت دیگر عمارتوں پر ابھی مزید بینرز بھی آویزاں کیے جائیں گے (بقیہ نمبر24صفحہ12پر )

ڈاکٹروں کی مختلف تنظیموں نے تشہیری مواد اور پوسٹرز نشتر ہسپتال کی عمارت سے مٹانے کا مطالبہ کیا ہے دوسری جانب نشتر ہسپتال انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعث کنٹین و پارکنگ اسٹینڈز پر اوور چارجنگ کا سلسلہ تھم نہ سکا پارکنگ اسٹینڈز پر موٹر سائیکل 10 روپے کی بجائے 20 روپے سائیکل بھی 10 روپے سے 20 روپے گاڑی سے 20 کی بجائے 40 رپے وصول کر رہے ہیں اسی طرح نشتر ہسپتال کی مین کنٹین اور ایمرجنسی سے ملحقہ کنٹین پر ریگولر بوتل 20 روپے کی بجائے 25 جوس 30 روپے چائے کا کپ 30 روپے میں فروخت ہو کر رہے ہیں جبکہ نشتر انتظامیہ کیمطابق تحریری درخواست دی جائے تو ٹھیکیدار کیخلاف جرمانہ سمیت دیگر کارروائی کی جائے گی دریں اثناء نشتر ہسپتال ملتان میں صبح 8 بجے سے سہ پہر 4 بجے تک ٹریفک کا بے ہنگم رش مریضوں اور ان کے لواحقین کیلئے درد سر بن گیا ہے انتظامی طور پر تمام ٹریفک کو گیٹ نمبر 2 سے داخلے کی اجازت ہے جبکہ خارجی راستہ کیلئے انہیں ایک لمبا چکر لگا کر گیٹ نمبر 3 سے گزر کر جانا پڑتا ہے مریضوں اور لواحقین نے انتظامی طور پر اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -