لنڈی کوتل،بیوپاریوں نے پاکستان کومال مویشیوں کی سپلائی بند کردی

لنڈی کوتل،بیوپاریوں نے پاکستان کومال مویشیوں کی سپلائی بند کردی

  

خیبر ایجنسی (بیورورپوٹ)افغانستان سے بیوپاریوں نے پاکستان کومال مویشیوں کی سپلائی بند کر دیا لنڈیکوتل میں چھوٹے گوشت قصائیوں کے دوکانوں کو تالے لگ گئے افغانستان سے پاکستان لانے پر فی دنبہ افغانستان میں پندرہ سو افغانی اور پاکستان میں میچنی چیک پوسٹ پر پانچ سو روپے ٹیکس وصول کیا جاتاہے ،ذرائع کے مطابق کہ عیدالضحی سے تقریبا دس دن پہلے پولیٹکل انتظامیہ نے افغانستان سے مال مویشی لانے پر ایجنسی ٹیکس عائد کرکے میچنی چیک پوسٹ پر فی جانور پانچ سو روپے ٹیکس وصول کیا گیا جو عید کے بعد بھی ٹیکس وصولی جا ری ہیں جبکہ عید کے بعد افغانستان کے علاقے طورخم گمرگ میں بھی افغان حکام نے پاکستان لے جانے والے مال مویشیوں پر ٹیکس عائد کیا اور تقریبا پندرہ سو افغانی کرنسی فی جانور وصول کیا جاتا ہیں جس کی بناء افغانستان کے بیوپاریوں(کوچیان) نے مال مویشی لانا بند کر دیااور انہوں نے موقف اختیا ر کیاکہ دونوں اطراف ٹیکس وصولی سے تقریباتین ہزار پاکستانی روپے فی جانور یعنی دنبہ مہنگا ہو گیا اس لئے انکو کوئی فائدہ نہیں ہو تا مال مویشی بند ہونے سے لنڈیکوتل اور طورخم میں تقریبا دو درجن چھوٹے گوشت قصائیوں کے دوکانیں بند ہو گئے ہیں لنڈیکوتل اور طورخم کے قصائیوں نے بتا یا کہ عید الضحی کے موقع پر مال مویشیوں پر ایجنسی ٹیکس عائد کیا گیا تھا لیکن اب بھی میچنی چیک پوسٹ پر ٹیکس وصول کیا جا تا ہیں لہذا حکومت سے پر زور مطالبہ کر تے ہیں کہ وہ مال مویشیوں پر ٹیکس ختم کریں اور انہیں بے روز گار ہونے سے بچایا جا ئے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -