گروپ انشورنس کے نام پر تنخواہوں سے کٹوتی کا نیا سلسلہ شروع‘ ملازمین پریشان

گروپ انشورنس کے نام پر تنخواہوں سے کٹوتی کا نیا سلسلہ شروع‘ ملازمین پریشان

  

ملتان(جنرل رپورٹر)وفاقی حکومت نے گروپ انشورنس کے نام پر ملازمین کی تنخواہوں سے کٹوتی کانیا سلسلہ شروع کر دیا گریڈ 16سے اوپر ملازمین کے بعد اب سکیل 1سے 15 کے ملازمین کی تنخواہوں سے ماہِ رواں سے کٹوتی کے بعد تنخواہوں کی سلپ کا اجرا کیا گیا کٹوتی بہبود فنڈ کی طرز پر(بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

2012سے کی جائے گی آنے والے دنوں میں سابقہ کے نام پر مزید کٹوتی ہو نا شروع ہوجائے گی اس بارے گفتگو کرتے ہوئے ریلوے ٹریفک یارڈ سٹاف ایسوسی ایشن کے سیکرٹری جنرل شجاعت حسین نے کہا کہ گروپ انشورنس کی پوری دنیا میں جو پالیسی ہے اس کے مطابق پالیسی کے مکمل ہونے پر ملازمین کو اصل زر منافع کے ساتھ واپس کیا جاتا ہے مگر یہاں دنیا سے الگ ایک قانون لاگو کر دیا کہ جس ملازم کی تنخواہ پر واردات کی جائے گی اس کے بدلے اس ملازم کو اس کی زندگی میں کچھ حاصل نہ ہوسکے گا۔سال2017کے بجٹ کے بعد1 انکریمنٹ دے کر 2مستقل انکریمنٹ واپس لے کر ملازمین کی تنخواہوں کا بھرکس نکال دیا گیا سکیل 1سے 5کے ملازمین کی کوارٹر پر مرمت کا 5فیصد کٹوتی کے خاتمے کا اعلان پر عمل درآمد تاحال ممکن نہیں ہوسکا۔انہوں نے کہا یہ وقت پاکستان ریلوے کے ہی نہیں پاکستان بھر کے مزدور نمائندوں کے لیڈران کے امتحان کا وقت ہے اپنے اداروں کے سربراہوں کو تحریری طور پر تحفظات کا اظہار کریں اور اگر پھر بھی معاملات حل نہ ہوں تو عدالتِ عالیہ تک رسائی کی جائے تاکہ ملازمین کی تنخواہوں کا قتلِ عام ہونے سے روکا جا سکے انہوں نے کہا کہ اگر یونین لیڈران اس موقع پر اتفاق واتحاد کا عملی مظاہرہ کرنے میں ناکام ہوئے تو بے رحم وقت ان کو کبھی معاف نہیں کرے گا ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -