امام عالی مقام ؑ نے انسانیت کے تحفظ کیلئے بے مثل قربانی پیش کی،علامہ قمرزیدی

امام عالی مقام ؑ نے انسانیت کے تحفظ کیلئے بے مثل قربانی پیش کی،علامہ قمرزیدی

  

راولپنڈی (جنرل رپورٹر)محسنِ انسانیت شہیدِ اعظم حضرت امام حسین علیہ السلام اور اُن کے جانثاروں کی یاد میں مجالس کا سلسلہ دنیا بھر کی طرح پورے پاکستان میں بدھ کو بھی جاری رہا۔ اس موقع پر علماء و ذاکرین نے مجالس عزا ء سے خطاب کرتے ہوئے شہدائے کربلا کے عظیم کارناموں پر روشنی ڈالی۔خواتین کی مجالس میں مخدراتِ عصمت و طہارت کے نقش قدم پر چل کر اسلام کی خدمت کرنے کے عہد کا اظہار کیا گیا۔علی مسجدسٹیلائٹ ٹاؤن میں علامہ سید قمرحیدرزیدی نے عشرہ محرم کی چھٹی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حسین ؑ ابن علی ؑ نے میدانِ کربلا میں سسکتی ہوئی انسانیت اور مٹتی ہوئی شریعت کی اقدار کو اپنے لہو سے سرخرو کردیا۔انہوں نے کہا کہ امام عالی مقام ؑ نے انسانیت کے تحفظ و پاسداری اور نجات کیلئے بے مثل قربانی پیش کی۔انہوں نے کہا کہ دین اسلام سب کے احترام کا سلیقہ سکھاتا ہے اور امن و سلامتی کا پیمبر ہے جس نے کبھی جارحیت نہیں کی بلکہ ہمیشہ دفاعی پالیسی اپنائی ہے اور جبرواستبداد کے خلاف نوکِ سناں پر چڑھ کر بھی آواز بلند کی ہے یہی وجہ ہے کہ آج بھی عزاداری کا سلسلہ جاری ہے جو ظلم و ستم کیخلاف باضمیر انسانوں کا پرامن احتجاج ہے۔انہوں نے کہاکہ 6محرم گزرنے کے باجود مقام افسوس ہے کہ الیکٹرانک میڈیاپرلہو لعب ، طربیہ پروگرام‘ڈرامے اور میوزک تاحال جاری ہیں جو شعائراسلامی کامذاق اڑانے اورآفت وبلیات کودعوت دینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ وہ طربیہ پروگراموں کوفی الفوربندکرکے عوام کومطمن کرے کیونکہ شعائراورشعوراسلام کااحترام سب پرلازم ہے۔ قصر ابوطالب مغل آباد میں علامہ حسین مقدسی نے عشرہ محرم کی چھٹی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امام عالی مقام ؑ خانوادہ محمد و آل محمد ؐکے عظیم فرد ہونے کے علاوہ راہِ حریت کے بے مثل رہنما ہیں جن کی محبت کو واجب قراردیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ کسی دور میں بھی جب یزیدیت نے سر اٹھایا توحسینیت ہی نے اس کے مقابلے میں سپر کا کام کیا۔انہوں نے کہا کہ قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے بقول ہمارا احتجاج عزاداری اس وقت تک جاری رہے گا جب تک عدل و انصاف کا بول بالا اوجبرواستبداد کا منہ کالا نہ ہوجائے۔اس موقع پر ایک قرارداد کے ذریعے قائد ملتِ جعفریہ آغا سیدحامدعلی شاہ موسوی کے ضابطہ عزاداری پر مکمل عملدرآمدکرنے کے عہد کا اظہار کیا گیا۔ مرکزی امامبارگاہ دربارِ عالیہ سخی شاہ پیارا کاظمی المشہدی چوہڑ ہڑپال میں عشرہ محرم کی چھٹی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ مطلوب تقی نے کہا کہ میدانِ کربلا میں نواسہ رسول ؐ حضرت امام حسین ؑ اور اُن کے وفا شعار جانثاروں نے اپنے خون سے اسلام کے تحفظ و بقاء کیلئے وہ عظیم قربانی دی جس کی بدولت آج ہر طرف اسلام کا پرچم پوری آب و تاب کے ساتھ لہرا رہا ہے۔ بارگاہ زینببیہ عابد مجید روڈ میں خطیبہ سیدہ بنت علی موسوی نے چھ محرم کی مجلس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عزاداری امام حسین ؑ بقائے اسلام کی ضامن ہے اور انسانیت کی فلاح اور طاغوت کی ناکامی ونامرادی کیلئے حسینیت کا دامن تھامنا ہوگا۔ امامبارگاہ ناصرالعزا میں حافظ تصدق حسین نے مجلس عزا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امام عالی مقام کی لازوال قربانی بقائے دین و شریعت کیلئے تھی یہی وجہ ہے کہ آج پوری کائنات میں پرچم اسلام پوری آب و تاب کیساتھ لہرارہا ہے اور تمام مکاتب اور مذاہب کے لوگ نواسہ رسول ؐ کی بارگاہ میں خراج عقیدت پیش کررہے ہیں۔عزاخانہ حسینی ڈھوک سیداں میں مجلس عزا سے علامہ سیدقمرحیدرزیدی نے خطاب کیا جس کے اختتام پر شبیہ جنازہ حضرت قاسم ابن حسن ؑ اور مہندی کا جلوس برآمد ہوا۔امامبارگاہ گریسی لائن چکلالہ میں مولانا سلیم ترابی، امامبارگاہ قدیم میں ذاکر ملک علی رضا کھوکھر ، ذاکر عرفان عباس نوتک، امامبارگاہ زین العابدین ؑ میں علامہ قمر حیدر زیدی نے عشرہ محرم کی چھٹی مجالس سے خطاب کیا۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -