پاکستان ، چین اور افغانستان میں ’پریکٹیکل کوآپریشن ڈائیلاگ‘ کا دوسرا دور کابل میں ہوا: دفتر خارجہ

پاکستان ، چین اور افغانستان میں ’پریکٹیکل کوآپریشن ڈائیلاگ‘ کا دوسرا دور ...
پاکستان ، چین اور افغانستان میں ’پریکٹیکل کوآپریشن ڈائیلاگ‘ کا دوسرا دور کابل میں ہوا: دفتر خارجہ

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان ، چین اور افغانستان کے درمیان ’پریکٹیکل کوآپریشن ڈائیلاگ‘ کا دوسرا دورمنگل اور بدھ کوکابل میں ہوا جس کی سربراہی افغانستان کی وزارتِ خزانہ کے ڈائریکٹر جنرل برائے ترقی مصطفٰی آریا نے کی جبکہ منصور احمد خان نے پاکستان اور چینی وزارت خارجہ کے اعلیٰ عہدیدار ژاو¿کین نے اپنے ملک کے وفود کی نمائندگی کی۔

وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق چین، افغانستان اور پاکستان کے درمیان ’پریکٹیکل کوآپریشن ڈائیلاگ‘ یعنی عملی تعاون سے متعلق مذاکرات کا دوسرا دور 26 اور 27 ستمبر کو کابل میں ہوا ۔ مذاکرات میں شامل تینوں فریقوں کا کہنا تھا کہ سہ فریقی عملی تعاون کا مقصد افغانستان میں تعمیرِ نو اور اقتصادی ترقی ہے، تینوں ملکوں نے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کے علاوہ ریجنل اکنامک کانفرنس آن افغانستان کے فریم ورک کے تحت تعاون بڑھانے پر بھی اتفاق کیا۔

یہ خبر بھی پڑھیں: جاپانی وزیراعظم نے پارلیمنٹ کو تحلیل کر دیا،عام انتخابات 22 اکتوبر کو ہونے کا امکان

سہ فریقی اجلاس میں پاکستان اور چین کے تعاون کو افغانستان کی ترجیحات کے مطابق بنانے کے لیے رابطوں اور تعاون کو بڑھانے کے علاوہ سہ فریقی منصوبوں کے لیے سکیورٹی کی فراہمی پر بھی بات ہوئی۔مواصلات، بنیادی ڈھانچے کی تعمیر، انسانی وسائل کی بحالی و ترقی کے علاوہ عوام کے درمیان رابطوں کے شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا گیا۔ وزارت خارجہ کے مطابق مذاکرات کا تیسرا دور اسلام آباد میں ہوگا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -