جماعت اسلا می خواتین ونگ کے زیر اہتما م حجا ب کا نفرس

جماعت اسلا می خواتین ونگ کے زیر اہتما م حجا ب کا نفرس

لاہور(لیڈی رپورٹر)جماعت اسلا می خواتین ونگ کے زیر اہتما م مقا می ہو ٹل میں حجا ب کا نفرس منعقد کی گئی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان دردانہ صدیقی کے زیر صدارت ہونے والی حجاب کانفرنس میں ہونے والے فورم ''لباس تہذیب کی علامت'' میں اہلیہ گورنر پنجاب محترمہ بیگم پروین سرور چوہدری صاحبہ نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی۔ فورم کے باقی شرکاء میں ڈاکٹر فائزہ اصغر، ڈاکٹرثمینہ کھوکھر،،عائشہ عثمان، عائشہ فہیم، پروین خان، طاہرہ یوسف،ڈاکٹر حمیرا طارق، ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی، نبیرہ نعیمی، ، ور ڈاکٹر امۃ اللہ زریں صاحبہ شامل تھیں ۔اس موقع پر خطا ب کر تے ہو ئے بیگم پروین سرور چوہدری کا کہنا تھا کہ ہر معاشرے کی تہذیب و تمدن، ان کی ترقی اور استحکام کا دارومدار اس کے نظریہ اقداروروایات اور اس کے اہداف پر ہوتا ہے۔یہی اقدار اس تہذیب کی شناخت ہوتی ہیں، اس شناخت کو دوبرقرار رکھنے اورور ام قائم رکھنے میں اہم اہم ترین کردار وہ ادارے ہیں جو معاشرے کی عمارت کومضبوطی سے تھام کر ستون کا کردار ادا کرتے ہیں۔

انہو ں نے کہا کہ حجا ب عورت کی زند گی کو مذید با وقا ر بنا تا ہے ۔ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی نے کہا کہ سلام مرد اور عورت دونوں کیاخلاقی کردار کا تعین کرتا ہے، مسلم عورت کا کردار حتی کہ اسکے لباس کو بھی عزت و وقار کی علامت قرار دیتا ہے، گویا لباس تہذیب کی علامت بن کر مسلمان عورت کو راہ عزت و تقدیس عطا کرتا ہے جس کی مغربی تہذیب آزادی و حریت کے تمام دعوؤں کے با وجود مثال پیش نہیں کر سکتی اپنے حیا دار لباس میں ملبوس مسلم عورت معاشرے میں امتیازی شخصیت کی حامل قرار پاتی ہے۔ اسکے نتیجے میں وہ معاشرے کی ایک مکمل رکن اور مکمل انسان کا رتبہ عملاً حاصل کرتی ہے عورت مستور ہو جانے کے بعد معاشرے میں اپنی ذہنی و روحانی صلاحیتوں کے ساتھ متعارف ہوتی ہے نہ کہ اپنی نسوانی دلکشی کے ساتھ ہو تا ہے ۔تقریب کے آخر میں خواتین میں شیلڈز تقسیم کی گئیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1