ضیاء اور مشرف دور میں قید و بند رہے ، اب عمران کی جیل بھی جانے کو تیار ہیں ، بلاول بھٹو زرداری

ضیاء اور مشرف دور میں قید و بند رہے ، اب عمران کی جیل بھی جانے کو تیار ہیں ، ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ یہ سلیکٹڈ حکومت سلیکٹڈ وزیراعظم اور سلیکٹڈ وزیر ہیں، ہم نے ضیاء اور مشرف کی جیلیں دیکھیں، عمران خان کی جیل بھی جانے کو تیار ہیں، سی پیک سے متعلق غیر ذمے دارانہ بیانات دیے گئے حالانکہ چین سے براہ راست بات کرنی چاہئے تھی، دورہ سعودی عرب میں حکومت کو کیا ملا، عوام کو آج تک نہیں بتایا گیا۔پارلیمینٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے حکمراں جماعت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت کے منی بجٹ سے غریب کے بجائے بلیک مارکیٹنگ اور عمران خان کی اے ٹی ایم مشینوں کو فائدہ ہوا ہے۔بلاول بھٹو نے کہا کہ بجٹ میں کوئی نئی چیز یا انقلابی کام نظر نہیں آیا، روزگار کے بڑے وعدے کیے گئے لیکن حکومتی پالیسیوں سے بے روزگاری بڑھے گی۔چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ سوچ رہا تھا وزیر خزانہ اسد عمر عوام دوست بجٹ لائیں گے لیکن بجٹ میں نان ٹیکس فائلر کو فائدہ ہوا اور نان فائلر کو ریلیف دینا کسی سکینڈل سے کم نہیں جبکہ بجلی اور گیس کی قیمت میں اضافے سے غریب بہت متاثر ہوگا۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی منصوبہ بندی اور حکمت عملی کہاں ہے، منی بجٹ سے مایوسی ہوئی،یہ منی ڈراما ہے جو پی ٹی آئی کی عادت ہے، یہ کر دینگے وہ کرینگے، کہاں ہیں وہ پلان، حکومت کی کوئی منصوبہ بندی نہیں۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا پہلے دن کہا تھا اچھے کام کی تعریف کروں گا، منی بجٹ میں میڈیکل آلات کی قیمتیں کم کر کے اچھا اقدام کیا لیکن کرنٹ بجٹ خسارہ کم کرنے کیلئے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا۔انہوں نے کہا کہ گاڑیوں اور بھینسوں کی نیلامی سے پاکستان کا مذاق اڑایا جا رہا ہے۔

بلاول بھٹو زرداری

اسلام آباد( سٹاف رپورٹر ) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف سے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ملاقات کی جس میں حکومت کیخلاف اہم ایشو پر مل کر ساتھ چلنے پر اتفاق کیا گیا ۔ جمعرات کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کی تقریر پر اپوزیشن کی جانب سے واک آؤٹ کے بعد قومی اسمبلی کی طلبی میں مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف سے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ملاقات کی ۔ ملاقات میں موجودہ سیاسی صورتحال پر بات چیت کی گئی اور اہم ایشو پر مل کر چلنے کے ساتھ ساتھ ایک دوسرے کیخلاف بیان بازی کی بجائے تعاون جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا دونوں رہنماؤں نے حکومت کی جانب سے پیش کئے جانیوالے منی بجٹ پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ملاقات میں خواجہ آصف ایاز صادق خورشید شاہ اور راجہ پرویز اشرف بھی موجود تھے ۔

مزید : صفحہ اول