پرانا بہالپور روڈ ، ریلوے اراضی پر لینڈ مافیا کی نظریں

پرانا بہالپور روڈ ، ریلوے اراضی پر لینڈ مافیا کی نظریں

ملتان (خصوصی رپورٹر)ریلوے ملتان ڈویژن کے افیسران کی مبینہ نااہلی کی وجہ سے پرانا بہاولپور روڈ پر واقع اربوں روپے مالیت کی اراضی وفاقی وزارت ریلوے کے نام ٹرانسفر نہیں ہو سکی۔ 40 سال سے زائد کا عرصہ گزرنے کے باوجود اراضی تاحال اپنے اصل مالک کے نام چلی آ رہی ہے(بقیہ نمبر45صفحہ7پر )

۔ لینڈ مافیا نے صرف خانہ ملکیت کا سہارا لیکر اربوں روپے مالیت کی اراضی پر ہاتھ صاف کرنے کی منصوبہ بندی پر عمل شروع کر دیا لیکن ریونیو ڈیپارٹمنٹ ملتان نے لینڈ مافیا کی کوشش کو ناکام بنا دیا۔ معلوم ہوا ہے کہ وفاقی وزارت ریلوے کی جانب سے 40 سال قبل پرانابہاولپور پر معظم خان نامی شہری کی 30 کنال 6مرلے اراضی ایکوائر کی۔ ایکوائرنگ ایجنسی نے اراضی مالک کو اس کی باقاعدہ قیمت بھی ادا کر دی اور قبضہ بھی حاصل کر لیا۔ اس وقت لینڈ ایکوزیشن کلکٹر نے نااہلی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اراضی وفاقی وزارت ریلوے کے نام ٹرانسفر نہ کرائی۔ صرف اس طرح خانہ ملکیت میں اراضی اپنے اصل مالک معظم خان کے نام موجود رہی۔ وقت گزرنے کے ساتھ ریلوے ہیڈ کوارٹر ملتان ڈویژن نے اس پر سرکاری افسران کی رہائش گاہیں تو تعمیر کر لیں لیکن اراضی کی ملکیت اپنے نام ٹرانسفر نہ کرائی جس پر لینڈ مافیا نے اس اراضی مالک کے ساتھ ملی بھگت کر کے عدالتوں کا سہارا لیا اور ملکیت ظاہر کر کے دعویٰ ڈگری کرایا جس پر محکمہ ریلوے ملتان ڈویژن حرکت میں آ گیا اور اراضی کی ملکیت ٹرانسفر کرانے کے لئے ڈی سی آفس ملتان سے رابطہ کیا اور اراضی کے اصل پیمائش کے بعد قابضین کو بھی بے نقاب کیا۔ ریونیو ڈیپارٹمنٹ کی رپورٹ کے مطابق 30 کنال سے زائد اراضی میں سے اس وقت اڑھائی مرلہ سے زائد اراضی فروخت بھی ہو چکی ہے لیکن ریلوے ملتان کینٹ ڈویژن کی جانب سے قابضین راجہ نوید اعظم اور دیگر کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جبکہ قبضہ کو متنازعہ بنانے کے لئے قابضین کو ریلیف دیتے نظر آ رہے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر