پنجاب ٹیکنیکل بورڈ کیطرف سے رزلٹ روکنے پر تحقیقاتی کمیٹی قائم

پنجاب ٹیکنیکل بورڈ کیطرف سے رزلٹ روکنے پر تحقیقاتی کمیٹی قائم

ترنڈہ محمدپناہ (نمائندہ پاکستان) گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی محسن آباد ترنڈہ (بقیہ نمبر49صفحہ12پر )

محمدپناہ کے پہلے سیشن 2018سالانہ امتحانات کے دوران4 طلبہ مبینہ طور پر نقل کرتے ہوئے پکڑے گئے تھے۔ جس پر پنجاب بورڈ آف ٹیکنیکل ایجوکیشن نے تمام طلبہ کا رزلٹ روک لیا ہے ۔جس پر طلبہ اور ان کے والدین گزشتہ کئی روز سے سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں ۔معاملہ میڈیا پر آنے کے بعد پنجاب بورڈ آف ٹیکنیکل ایجوکیشن نے اس معاملے کی تحقیقات کے لئے ڈسپلن کمیٹی قائم کی جس نے گزشتہ روز کالج آف ٹیکنالوجی محسن آباد ترنڈہ محمدپناہ میں تمام طلبہ اور متعلقہ امتحانی عملہ سے تحریری بیانات لئے ۔اس موقع پر کمیٹی نے طلبہ کو یقین دلایا کہ کسی طالب علم کی ساتھ کوئی ذیادتی نہیں ہوگی ہر طالب علم کو انصاف ملے گا ۔انہوں نے کہا کہ کمیٹی بورڈ کو رزلٹ ایک ہفتے کے اندر اندر جاری کرنے کی سفارش کرے گی تاہم بورڈ نقل کرتے پکڑے جانے والے پیپر انگریزی کا دوبارہ امتحان بھی لے سکتا ہے ۔اس موقع پر انجینئر خالد رشید بھٹہ پرنسپل کالج ،انجینئر فیض محمد بزدار وائس پرنسپل ،منیر احمد عباسی ،انجینئر فرحان حسن ،انجینئر شکیل احمد ،انجینئر محمد سلیم ،انجینئر ارسلان ودیگر موجود تھے ۔جبکہ اس موقع پر طلبہ کے والدین حاجی حضوربخش عباسی ،میاں مجاہد اسلام سندھا ایڈووکیٹ ،عبدالعزیز فیضی ،اللہ ڈتہ ،محمد رفیق ،فیض احمد ودیگر نے ٹیوٹا حکام سے رزلٹ فوری جاری کرنے اور کالج میں فوری طور پر ریگولر اکیڈمک سٹاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر